Tuesday , November 20 2018
Home / شہر کی خبریں / بارہ فیصد مسلم تحفظات پر کے سی آر کا دھوکہ، مسلمانوں کو ہتھیلی میں جنت دکھایا گیا

بارہ فیصد مسلم تحفظات پر کے سی آر کا دھوکہ، مسلمانوں کو ہتھیلی میں جنت دکھایا گیا

آلیر انکاؤنٹر پر چیف منسٹر کی سردمہری پر محمد عثمان شہید کا ٹی آر ایس سے استعفیٰ کا اعلان

حیدرآباد ۔ 15 ستمبر (پریس نوٹ) محمد عثمان شہید ایڈوکیٹ صدر آل انڈیا مسلم فرنٹ نے چیف منسٹر چندرشیکھر راؤ کے مسلمانوں کے تئیں رویے پر نالاں ہوکر تلنگانہ راشٹریہ سمیتی سے استعفیٰ دیدیا ہے۔ انہوں نے اپنے صحافتی بیان میںکہا کہ چندرشیکھر راؤ نے صرف مسلمانوں کو ہتھیلی میں جنت بتایا ہے۔ 12 فیصد تحفظات کا جھوٹا وعدہ کرکے مسلمانوں کو دھوکہ دیا ہے۔ آلیر انکاؤنٹر ایک ایسا دلخراش واقعہ ہے جو غیرت مند اور باضمیر مسلمان کبھی فراموش نہیں کرسکتا جس میں پانچ پہاڑ جیسے نوجوانوں کو گولی مار کر شہید کردیا گیا تھا جبکہ ان کے ہاتھ پاؤں بندھے ہوئے تھے اور اس پر چیف منسٹر کی سردمہری ہم کیسے بھول سکتے ہیں۔ وقف جائیدادوں کے تحفظ میں ریاستی حکومت ناکام ہوچکی ہے۔ آئندہ اسمبلی انتخابات میں صرف دو مسلم امیدواروں کو ٹکٹ دے کر ہمارے منہ پر طمانچہ مارا گیا جبکہ ٹکٹ دینے کا کلی اختیار صرف چیف منسٹر کے ہاتھ میں ہے۔ نگران چیف منسٹر مجلس اتحادالمسلمین کے ساتھ ہنی مون منارہے ہیں اور مجلس کو مسلم مسائل کا گتہ دار بنادیا ہے۔ وہ کسی کارکن سے ملنے کیلئے تیار نہیں نہ کبھی کسی کو سماعت کرنے کا موقع دیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT