Tuesday , November 21 2017
Home / عرب دنیا / باغیوں کی لاپرواہی، یمن بات چیت میں تعطل کا اندیشہ

باغیوں کی لاپرواہی، یمن بات چیت میں تعطل کا اندیشہ

کویت سٹی ۔ 9 مئی (سیاست ڈاٹ کام) کویت کی میزبانی میں یمنی حکومت اور باغیوں کے درمیان جاری امن بات چیت ایک پھر تعطل کا شکار ہونے لگی ہے۔ کویتی حکومت نے یمن میں جاری بحران کے حل کے لیے جاری بات چیت کو ناکام ہونے سے بچانے کے لیے کوششیں تیز کردی ہیں۔ اس سلسلے میں کویتی وزیر خارجہ نے یمنی حکومت کے وفد سے بات چیت کی ہے تاکہ امن عمل کو ناکامی سے بچایا جاسکے۔ یمنی حکومت کے کویت میں موجود وفد نے ملک میں امن وامان کی بحالی کے عمل کی نگرانی کرنے والے 18 دوست ملکوں کے سفیروں سے ملاقاتیں کی ہیں۔ یہ ملاقاتیں ایک ایسے وقت میں ہوئی ہیں جب حکومت اور باغیوں کے درمیان سیکیورٹی، سیاسی مسائل اور قیدیوں کی رہائی کے لیے قائم کردہ ذیلی کمیٹیاں باغیوں کی عدم دلچسپی کے نتیجے میں ناکام ہوگئی ہیں۔ باغیوں کے نمائندے کمیٹیوں کے اجلاس میں شریک نہیں ہو رہے ہیں جس کے نتیجے میں امن عمل متاثر ہو رہا ہے۔ حکومت اور باغیوں کی قائم کردہ کمیٹیوں کا پانچواں اجلاس آج شام ہوگا۔ اقوام متحدہ کے امن مندوب نے تمام فریقین سے اجلاس میں شرکت یقینی بنانے پر زور دیا ہے۔ یہ اطلاع بھی ملی ہے کہ یمنی حکومت کے نمائندہ وفد نے مذاکرات کی نگرانی کرنے والے 18 ملکوں کے سفیروں سے بات چیت میں اپنا نقطہ نظر اور موقف پیش کیا ہے۔ اسی دوران کویتی نائب وزیراعظم اور وزیرخارجہ نے یمنی حکومت کے وفد سے تفصیلی ملاقات کی ہے۔ اس ملاقات میں یمن میں کشت وخون روکنے اور تمام حل طلب مسائل کے حل اور ملک میں دیر پاامن استحکام کے لیے فریقین کے درمیان ہم آہنگی پیدا کرنے کی کوشش کی ہے۔

TOPPOPULARRECENT