Tuesday , November 21 2017
Home / Top Stories / باہمی مذاکرات میں تعطل کیلئے ہندوستان پر الزام

باہمی مذاکرات میں تعطل کیلئے ہندوستان پر الزام

مسئلہ کشمیر کی یکسوئی کے بغیر ترقی مشکل ،پاکستان کی 70 ویں یوم آزادی تقریب سے شاہد عباسی کا خطاب
اسلام آباد ۔ 14 اگست (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان کے نئے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے دورخی تعلقات میں پائے جانے والے تعطل کیلئے ہندوستان کو موردالزام ٹھہراتے ہوئے کہا کہ ہندوستان کا ’’وسعتی نظریہ‘‘ دونوں ممالک کے درمیان تعمیری تعلقات کی راہ میں زبردست رکاوٹ ہے۔ پاکستان کی یوم آزادی کی 70 ویں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان نہ صرف ہندوستان بلکہ دنیا کے تمام ممالک کے ساتھ یکساں خودمختاری کی اساس پر مثبت اور تعمیری تعلقات روا رکھنے کا خواہاں ہے۔ ہماری حکومت نے حالانکہ ہندوستان کے ساتھ بامعنی اور مثبت تعلقات استوار کرنے کیلئے یوں تو کئی بار پیشرفت کی اور پرامن سطح پر تعلقات کو ایک نئی جہت دینے کی کوشش کی تاکہ جو بھی مسائل اور تنازعات ہی انہیں مذاکرات کے ذریعہ حل کیا جاسکے۔ تاہم بدبختی کی بات یہ ہیکہ ہندوستان کے توسیع پسندانہ نظریات نے مذاکرات کی راہ میں رکاوٹیں پیدا کیں اور آج نتیجہ آپ کے سامنے ہے۔ سب دیکھ رہے ہیں کہ ہندوپاک کے درمیان مسئلہ کشمیر کو لیکر تلخیاں اور دوریاں بڑھتی جارہی ہیں۔ یہاں اس بات کا تذکرہ بھی ضروری ہیکہ پاکستان میں 14 اگست اور ہندوستان میں 15 اگست یوم آزادی تقریبات بڑے پیمانے پر منائی جاتی ہیں۔ اس سال پاکستان نے یوم آزادی تقریبات کیلئے چین کے نائب وزیراعظم وانگ یانگ کو بطور مہمان خصوصی مدعو کیا تھا لہٰذا وانگ پیانگ 13 اگست کو ہی پاکستان پہنچ گئے تھے۔ اپنی بات جاری رکھتے ہوئے مسٹر عباسی نے کہاکہ مشکل سے مشکل وقت میں چین اور پاکستان ہمیشہ ایک دوسرے کے شانہ بشانہ موجود رہے اور دونوں ممالک کی دوستی کبھی بھی نامساعد حالات کا شکار نہیں ہوئی بلکہ اب تو آنے والی نسل بھی پاکستان ۔ چین کی گہری دوستی کو دیکھے گی۔ انہوں نے بین الاقوامی برادری پر زور دیاکہ وہ علاقائی تنازعات کی یکسوئی میں اپنا رول ادا کریں۔ خصوصی طور پر مسئلہ کشمیر کی یکسوئی اقوام متحدہ کی قرارداد کے مطابق ہونی چاہئے تاکہ علاقہ پائیدار قیام امن کو ممکن بنایا جاسکے۔ صدر ممنون حسین نے عوام پر زور دیا کہ اگر وہ ایک ترقی یافتہ پاکستان دیکھنے کے خواہاں ہیں تو انہیں متحد ہوجانا چاہئے۔ اب وقت آ گیا ہیکہ عوام اپنے شخصی مصائب کو فراموش کردیں اور ملک کے دستور کے پابند بن جائیں۔ پاکستان نے چین کے نائب وزیراعظم وانگ یانگ کو یوم آزادی تقریبات میں بطور مہمان خصوصی شرکت کرنے کی دعوت دی تھی جسے انہوں نے قبول کرلیا اور تقریبات سے محظوظ ہوئے اور کہا کہ پاکستان اور چین کے تعلقات فولاد سے بھی زیادہ مضبوط اور شہد سے بھی زیادہ میٹھے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT