Wednesday , September 26 2018
Home / Top Stories / بحرروم میں کشتی اُلٹ جانے سے 700 تارکین وطن ہلاک

بحرروم میں کشتی اُلٹ جانے سے 700 تارکین وطن ہلاک

روم۔19اپریل ( سیاست ڈاٹ کام) 700افراد اندیشہ ہے کہ غرق ہوکر ہلاک ہوگئے ۔ جب کہ ایک ماہی گیر کشتی جس میں تارکین وطن کو یوروپ منتقل کیا جارہا تھا ۔ لیبیا کے ساحل کے قریب غرق ہوگئی ۔ اقوام متحدہ کے ایک پناہ گزین ادارہ نے آج کہا کہ بحرروم میں تارکین وطن کی ہلاکت کا یہ اب تک کا سب سے بڑا حادثہ تھا ۔ صرف 28افراد اُلٹ جانے والی کشتی سے بچالئے گئے

روم۔19اپریل ( سیاست ڈاٹ کام) 700افراد اندیشہ ہے کہ غرق ہوکر ہلاک ہوگئے ۔ جب کہ ایک ماہی گیر کشتی جس میں تارکین وطن کو یوروپ منتقل کیا جارہا تھا ۔ لیبیا کے ساحل کے قریب غرق ہوگئی ۔ اقوام متحدہ کے ایک پناہ گزین ادارہ نے آج کہا کہ بحرروم میں تارکین وطن کی ہلاکت کا یہ اب تک کا سب سے بڑا حادثہ تھا ۔ صرف 28افراد اُلٹ جانے والی کشتی سے بچالئے گئے ۔

اقوام متحدہ کی ترجمان کارلوٹ آسامی نے کہا کہ زندہ بچ جانے والوں نے اشارہ دیا کہ کشتی میں 700سے زیادہ افراد سوار تھے ۔حکام کے مطابق اب تک 24 لاشیں نکالی جاچکی ہیں جبکہ 50 افراد کے بھی زندہ بچنے کی اطلاعات ہیں ۔ پناہ گزینوں کے لئے اقوام متحدہ کے ادارے کے مطابق اگر ہلاکتوں کی تصدیق ہوتی ہے تو یہ بحرہ روم میں پیش آنے والے المناک ترین حادثوں میں سے ایک ہوگا ۔ اٹلی کوسٹ گارڈ کے ترجمان نے بتایا کہ تارکین وطن سے بھری کشتی جو مچھلیاں پکڑنے کیلئے استعمال ہوتی ہے کے ذریعہ ساحل سے 27 کیلو میٹر اور اٹلی کے ساحل سے 210 کیلو میٹر دور غرقاب ہوگئی ۔

یہ اطلاع ہے کہ کشتی اس وقت غرقاب ہوگئی جب ایک تجارتی جہاز کو قریب دیکھ کر کشتی میں سوار افراد ایک جانب جمع ہوگئے اس سے توازن بگڑ گیا اور کشتی الٹ گئی ۔ بچاؤ کاری کیلئے 20 کشستیاں اور 3 ہیلی کاپٹرس حصہ لے رہے ہیں ۔ لیبیا کے سمندری حدود میں جاری ان امدادی کاموں میں اٹلی اور مالٹا کی بحریہ سمیت خانگی جہاز بھی شریک ہیں ۔ وزیراعظم اٹلی میتیو رنیزی نے بحرہ روم میں تارکین وطن کی ہلاکتوں کو ایک ایسا قتل عام قرار دیا ہے جو روزانہ کی بنیاد پر ہورہا ہے ۔ حالیہ دنوں میں بحرہ روم پار کرنے کی کوشش کرنے والے تقریباً 10 ہزار تارکین وطن کو بچایا بھی گیا ہے ۔ اٹلی اس بحران سے نمٹنے کیلئے یوروپی یونین سے مدد مانگ رہا ہے ۔ آفریقہ اور مشرق وسطیٰ میں تشدد ، تنازعات اور بدامنی کے علاوہ غربت سے تنگ آکر ایک لاکھ 70 ہزار افراد نے غیرقانونی طور پر اٹلی کا رخ کیا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT