Thursday , June 21 2018
Home / جرائم و حادثات / بدنام زمانہ روڈی شیٹر ٹولی کے چھ افراد کو سزاء

بدنام زمانہ روڈی شیٹر ٹولی کے چھ افراد کو سزاء

دو ملزمین کو گانجہ رکھنے کے الزام میں قصور وار ‘نامپلی کریمنل کورٹ کا فیصلہ

دو ملزمین کو گانجہ رکھنے کے الزام میں قصور وار ‘نامپلی کریمنل کورٹ کا فیصلہ
حیدرآباد 23 مارچ (سیاست نیوز) نامپلی کریمنل کورٹ کے میٹرو پولیٹین سیشن جج شریمتی ٹی رجنی نے آج شہر کے مبینہ بدنام زمانہ روڈی شیٹر ایوب خان کی ٹولی سے تعلق رکھنے والے 6 افراد کو اپنے حریف روڈی شیٹر کو مبینہ قتل کی سازش کیس میں 5 سال کی سزائے قید بامشقت سنائی ہے۔ 9 فبروری سال 2012 کو کمشنر ٹاسک فورس ٹیم کے انسپکٹر مسٹر موہن کمار نے رین بازار پولیس اسٹیشن کے مبینہ خطرناک روڈشیٹر فیاض علی ‘روڈی شیٹر الیاس اور دیگر 6 ساتھیوں سے حسن ‘محمد بدر الدین ‘سید عمران ‘محمد ذاکر ‘سید اعجاز اور سید حاجی و دیگر کو میر چوک علاقہ میں اس وقت رنگے ہاتھوں گرفتار کرلیا تھا جب وہ شاہ علی بنڈہ کے مبینہ روڈی شیٹر نجف علی کومبینہ طورپر قتل کا منصوبہ تیار کیا تھا اور مہلک ہتھیار وںکے ساتھ اس کا انتظار کررہے تھے ۔ ٹاسک فورس نے اس کارروائی میں ایوب کی ٹولی کے قبضہ سے 4300 گرام گانجہ اور مہلک ہتھیار برآمد کرلیا بعدازاں ملزمین کو میر چوک پولیس کے حوالے کردیا تھا۔ تحقیقات کے دوران پولیس کو یہ پتہ لگا کہ ایوب خان اور نجف علی کی ٹولیوں کے ایک دوسرے پر سبقت حاصل کرنے کے لیے مخاصمت چل رہی تھی ۔ پولیس نے گرفتار افراد کے خلاف میٹرو پولیٹین سیشن جج کی عدالت میں چارج شیٹ داخل کی تھی تاہم مقدمہ کی سما عت کے دوران روڈی شیٹر فیاض علی اور الیاس کا قتل ہوگیا۔ سیشنس کورٹ کے سرکاری وکیل مسٹر وی بالا بچیاں نے عدالت میں اپنا استدلال پیش کرتے ہوئے یہ بتایا تھا کہ گرفتار ملزمین کا تعلق بدنام زمانہ روڈی شیٹرس سے ہے اور عوام کو اپنی غیر قانونی سرگرمیوں کے ذریعہ مبینہ طورپرخوفزدہ کررہے تھے۔ اس کیس میں جملہ 6 گواہوں نے اپنا بیان قلمبند کروایا تھا جس کے نتیجہ میں میٹرو پولیٹین سیشن جج نے آج 6 ملزمین کو قصور وار قراردیا اور انہیں انڈین آرمس ایکٹ کے تحت 5 سال کی سزا قید بامشقت اور 10 ہزار روپئے کا جرمانہ عائد کیا جبکہ دیگر دو ملزمین محمد بدر الدین اور سید حسن کو غیر قانونی طور پر گانجہ قبضہ میں رکھنے پر قصور وار قراردیا اور انہیںاین ڈی پی ایس ایکٹ کے تحت ایک سال کی سزا اور ایک ہزار روپئے جرمانہ صادرکیا۔

TOPPOPULARRECENT