Wednesday , December 19 2018

برطانیہ میں سرپوش پہننے والی ماں پر حملہ

لندن۔8جون ( سیاست ڈاٹ کام ) ’’نسلی منافرت‘‘ کی بناء پر حملے کے واقعہ میں خواتین کے ایک گروپ نے لندن میں مبینہ طور پر ایک مسلم خاتون کو سرپوش پہننے پر بدگوئی کی ‘ گھونسے اور لاتیں ماری ۔پولیس اس واقعہ کی تحقیقات کررہی ہے ۔ یہ خاتون جو مبینہ طور پر ایک مسلم ماں ہے‘ سرپوش ( حجاب) پہنے ہوئی تھی جب کہ وہ اپنے بچوں کو اُن کے اسکول سے جو جنوبی لندن میں واقع ہے لانے کیلئے گئی تھی‘ اس نوجوان ماں پر تین خواتین نے سرپوش پہننے پر حملہ کیا ۔ جب کہ وہ خانگی اسلامی پرائمری اسکول جارہی تھی ۔ دی ایوننگ اسٹانڈر روزنامہ نے اطلاع دی ہے کہ ان خواتین نے پہلے تو اس سے سوال کیا کہ کیا وہ گرمی کی وجہ سے سرپوش پہنے ہوئے ہیں ‘بعد ازاں انہوں نے اس کا سرپوش کھینچ لیا اور اُسے گھونسے مارے ۔ مسلم ماں نے جو اپنی شناخت ظاہر نہیں کرنا چاہتی روزنامہ سے کہا کہ ایک خاتون اس کے سرکو نیچے جھکارہی تھی جب کہ دیگر مجھے مار رہی تھی ۔ یہ نسلی منافرت پر مبنی حملہ تھا کیونکہ وہ بدگوئی کررہی تھی ۔ خاتون نے کہا کہ اُسے کوئی شدید جسمانی نقصان نہیں پہنچا ۔ لندن ایمبولنس سرویس کو طلب کرلیا گیا تھا ۔ یہ حملہ مبینہ طور پر ڈربی روڈ ٹرائیڈن میں ہوا تھا جو اسکول کے قریب ہے ۔ ایک عورت نے اسے روک لیا تھا جب کہ دوسری عورت اس پر جھپٹ پڑی تھی ۔ پولیس عہدیداروں کو طلب کرلیا گیا اور دونوں خواتین جن کی عمریں 18اور 35سال ہیں حملہ کے شبہ میں گرفتار کرلی گئی ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT