Friday , November 24 2017
Home / شہر کی خبریں / برقی و آبرسانی بلوں کی معافی کا اعلان ، کے سی آر کا تاریخی اقدام

برقی و آبرسانی بلوں کی معافی کا اعلان ، کے سی آر کا تاریخی اقدام

ہر علاقہ میں بنیادی سہولتیں فراہم کرنے حکومت کا عزم ، محمد محمود علی ڈپٹی چیف منسٹر کا بیان
حیدرآباد۔/4ڈسمبر، ( سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی نے گریٹر حیدرآباد کے 6 لاکھ غریب خاندانوں کو برقی اور آبرسانی کے بقایا بلوں کی معافی سے متعلق چیف منسٹر کے اعلان کو تاریخی اقدام قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ نے اس اعلان کے ذریعہ یہ ثابت کردیا ہے کہ ٹی آر ایس اقلیتوں اور غریبوں کی فلاح و بہبود کو اولین ترجیح دیتی ہے۔ شہر کے 6 لاکھ خاندانوں کو اس اعلان سے فائدہ ہوگا اور یقینی طور پر اقلیتی غریب خاندانوں کو برقی اور آبرسانی کے بقایا جات سے راحت ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ شہر میں برقی کے 128کروڑ اور آبرسانی کے 290کروڑ کے بقایا جات کو معاف کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ چیف منسٹر کو پارٹی قائدین کی جانب سے نمائندگی کی گئی کہ غریب خاندانوں کو برقی اور آبرسانی بلز کی ادائیگی کیلئے متعلقہ عہدیداروں کی جانب سے ہراساں کیا جارہا ہے۔ اس شکایت کا سنجیدگی سے نوٹ لیتے ہوئے چیف منسٹر نے عہدیداروں کو نہ صرف جبری وصولی سے روک دیا بلکہ غریب خاندانوں کے بقایا جات  کے بارے میں رپورٹ طلب کی۔ انہوں نے کہا کہ متعلقہ محکمہ جات کی جانب سے رپورٹ کی وصولی کے بعد بقایا جات کی معافی کا فیصلہ کیا گیا اور اس فیصلہ سے پرانے شہر کے غریب خاندانوں کو راحت ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ غریب اقلیتی خاندانوں کی خاصی تعداد ایسی ہے جو برقی اور آبرسانی کا بل ادا کرنے کے موقف میں نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ انتخابی ضابطہ اخلاق ختم ہونے کے بعد حکومت اس اسکیم کی تفصیلات کا اعلان کرے گی۔ محمود علی نے بتایا کہ عہدیداروں کے ذریعہ اس سلسلہ میں پتہ چلانے کی کوشش کی جارہی ہے کہ حقیقی معنوں میں کتنے غریب خاندانوں نے ابھی تک آبرسانی اور برقی کے بلز ادا نہیں کئے۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ حیدرآباد کو عالمی معیار کا شہر بنانے کا عہد کرچکے ہیں اور تمام علاقوں میں بنیادی سہولتوں کی فراہمی حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ محمود علی نے بتایا کہ چیف منسٹر آئندہ تین برسوں میں ریاست کے ہر گھر کو پینے کے پانی کا کنکشن فراہم کرنے کا عہد کرچکے ہیں۔ شہر میں گوداوری سے پانی کی پائپ لائن کا کام مکمل ہوگیا اور کئی علاقوں کو پانی سیراب کیا جارہا ہے جو گزشتہ کئی برسوں سے پانی کی قلت کا شکار تھے۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے چیف منسٹر کے اس اقدام کا خیرمقدم کیا اور کہا کہ ملک کی کسی بھی ریاست میں اس طرح کا اعلان نہیں کیا گیا جس میں غریبوں کو برقی اور آبرسانی کے بلز کی ادائیگی سے راحت دی گئی ہے۔ انہوں نے واضح کردیا کہ چیف منسٹر کا یہ فیصلہ خالص غریب خاندانوں کی بھلائی کو پیش نظر رکھ کر کیا گیا اور اس کے پس پردہ کوئی سیاسی اغراض و مقاصد نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کا یہ الزام بے بنیاد ہے کہ بلدی انتخابات کو پیش نظر رکھ کر یہ فیصلہ کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر غریبوں اور اقلیتوں کیلئے مزید کئی اسکیمات کا منصوبہ رکھتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT