Monday , July 16 2018
Home / شہر کی خبریں / برقی کھمبوں اور تاروں پر بیل بوٹوں کا انبار

برقی کھمبوں اور تاروں پر بیل بوٹوں کا انبار

محکمہ برقی سے عدم نگہداشت کا انجام ، خطرناک حادثات ممکن
حیدرآباد۔4اپریل(سیاست نیوز) موسم گرما کے آغاز سے قبل محکمہ برقی کی جانب سے اعلان کیا جاتا ہے کہ موسم گرما کی آمد کے پیش نظر محکمہ برقی شہر کے تمام علاقوں میں معیاری و بلا وقفہ برقی کی سربراہی کے لئے نگہداشت کے نام پر بیشتر علاقو ںمیں دو گھنٹے تک برقی سربراہی منقطع کی جاتی ہے لیکن اس کے باوجود شہر کے کئی علاقو ںکے برقی کھمبوں اور تاروں کو دیکھ کر ایسالگتا ہے کہ محکمہ برقی کی جانب سے نگہداشت کے نام پر کی جانے والی کاروائیاں برائے نام ہوا کرتی ہیں اور ان کاروائیوں کے نام پر صرف تکنیکی امور کا جائزہ لیا جاتا ہے۔شہر کے کئی علاقو ں میں تاروں اور برقی کھمبوں پر پھیلی بیلوں اور درختوں کو دیکھتے ہوئے ایسا معلوم ہوتا ہے کہ شہر میں محکمہ برقی کی جانب سے تاروں کی تبدیلی یا صفائی ہوئے برسوں گذر چکے ہیں۔برقی کھمبوں سے درختوں کی بیل کے لپٹنے کے سبب نہ صرف برقی سربراہی میں خلل کی شکایت ہوتی ہے بلکہ الکٹرانک انجینئرس کا ماننا ہے کہ ان حالات میں بڑے خطرناک حادثات رونما ہو سکتے ہیں لیکن شہر کے کئی علاقوں بشمول رہائشی و تجارتی علاقوں میں ایسے کئی برقی کھمبے ہیں جن کے تاروں سے درختوں کی بیلیں لپٹی ہوئی ہیں اور کئی زمانہ سے انہیں ہٹانے کے اقدامات نہیں کئے گئے جو کہ برقی خدمات کو متاثر کرنے میں اہم کردار ادا کرتی ہیں۔دونوں شہروں کے کئی علاقو ں میں برقی تاروں پر پائے جانے والے ان درختوں کی صفائی کیلئے کئے جانے والے اقدامات کے سلسلہ میں بتایا جاتا ہے کہ محکمہ برقی کی جانب سے ہر سال نگہداشت کے نام پر کئے جانے والے کاموں کے دوران اس صفائی کا تذکرہ کیا جاتا ہے اور اس کے لئے خصوصی بجٹ کی فراہمی بھی عمل میں لائی جاتی ہے لیکن اس کے باوجود بھی شہر کے کئی مصروف ترین علاقو ںکے برقی کھمبوں کو دیکھتے ہوئے ایسا محسوس ہوتا ہے کہ یہ برقی کھمبے کسی بھوت بنگلہ ہیں جنکی صفائی کسی کی ذمہ داری نہیں ہے اسی لئے ان برقی کھمبوں پر درختوں کی بیلیں پھیلی ہوئی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT