Sunday , December 17 2017
Home / شہر کی خبریں / برمی مہاجرین کو پناہ دینے سے ہندوستان کی رواداری کی مثال قائم ہوگی

برمی مہاجرین کو پناہ دینے سے ہندوستان کی رواداری کی مثال قائم ہوگی

روہنگیا مسلمانوں پر ظلم و بربریت کے خلاف احتجاجی جلسہ، سرکردہ خواتین کاخطاب

حیدرآباد۔/17ستمبر، ( پریس نوٹ ) شریعت کمیٹی ( برائے خواتین ) کی جانب سے خواتین و طالبات کیلئے برما میں روہنگیا مسلمانوں پر جاری ظلم و بربریت کے خلاف جلسہ احتجاج برائے خواتین 16ستمبر کو خواجہ منشن فنکشن ہال مانصاحب ٹینک میں منعقد ہوا۔ جس میں خاتون مقررات نے روہنگی برمی مسلمانوں کے قتل عام کی سخت مذمت کی اور کہا کہ اس قتل عام میں بچوں، بوڑھوں اور عورتوں کو بیدردی سے قتل کیا گیا، عورتوں کی بے حرمتی کی گئی، ان تمام واقعات نے انسانیت کو جھنجھوڑ کررکھ دیا ۔ معصوم شہریوں کو بلاوجہ ظلم و زیادتی کا نشانہ بنایا گیا اور اکثر واقعات میں انہیں زندہ جلایا بھی گیا۔ اس ظلم و بربریت پر مسلم ممالک کی خاموشی و سرد مہری ایک شرمناک عمل ہے، ان ممالک میں اتنی اخلاقی جرأت بھی نہیں ہے کہ وہ اس بربریت کو رکواسکیں۔ جلسہ احتجاج میں کہا گیا کہ آنگ سان سوچی نوبل پرائز رکھنے کے قابل نہیں، اس سے یہ باوقار نوبل پرائز کو واپس لیا جائے۔ مقررات نے حکومت سے اپیل کی کہ وہ برمی مہاجرین کو اپنے ملک سے نہ نکالے۔ جس طرح حکومت ہند نے انہیں Asylem اسٹیٹس دیا ہے اس کو برقرار رکھے اور جس طرح تبت، نیپال، افغانستان اور پاکستان کے مہاجرین ہندوستان میں موجود ہیں اسی طرح برمی مہاجرین کو بھی انسانیت کے ناطے یہیں رہنے کی اجازت دی جائے۔ کیونکہ یہ ہندوستان کی رواداری کی ایک بہترین مثال ہے۔ خاتون مقررات نے ہندوستانی عوام سے درخواست کی ہے کہ وہ روہنگیا مسلمانوں کی مدد کیلئے آگے آئیں جو اپنے ہی ملک میں غیر انسانی سلوک کی وجہ سے یہاں ہجرت کرکے آئے ہیں۔ خاتون مقررات نے یہ بھی اپیل کی کہ تمام مسلمانوں کی اجتماعی ذمہ داری ہے کہ وہ ان مہاجرین کا ہر طرح سے خیال رکھیں۔ روہنگیا مسلمانوں کی فلاح و بہبود کیلئے ایک جائنٹ ایکشن کمیٹی قائم کی گئی جس کے کنوینر ناظم الدین فاروقی ہیں اور اراکین جوائنٹ ایکشن کمیٹی میں جناب خواجہ آصف احمد نائب صدر مجلس تعمیر ملت اور کئی قابل قدر شخصیات شامل ہیں۔ کمیٹی کو ان کے بے پایاں صلاحیت و خدمات حاصل ہیں۔ پروفیسر جمیل النساء رکن آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ، پروفیسر رفیق النساء رکن عاملہ متحدہ تحفظ شریعت کمیٹی، ڈاکٹر تسنیم احمد رکن عاملہ متحدہ تحفظ شریعت کمیٹی، ڈاکٹر ذکیہ سلطانہ رکن عاملہ متحدہ تحفظ کمیٹی، محترمہ صوفیہ سہیل رکن متحدہ تحفظ شریعت کمیٹی، محترمہ عقیلہ خاموشی رکن آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ، ڈاکٹر اسماء زہرہ مسؤلہ ویمنس ونگ آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ، محترمہ تہنیت اطہر رکن آل انڈیا مسلم پرنسل لاء بورڈ، محترمہ طلحہ جبین رکن متحدہ تحفظ شریعت کمیٹی، محترمہ صبیحہ صدیقی رکن عاملہ آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ، پروفیسر طیبہ سلطانہ رکن عاملہ متحدہ تحفظ شریعت کمیٹی، محترمہ رقیہ فرزانہ رکن عاملہ متحدہ تحفظ شریعت کمیٹی اور محترمہ اصغر صدیقہ نائب صدر تعمیر ملت شعبہ خواتین نے اس جلسہ احتجاج کو مخاطب کیا۔ جس میں مختلف تنظیموں میں سلامہ گروپ، مجلس تعمیر ملت، شریعت کمیٹی اور بنت حرم کی خواتین و طالبات کی ہزاروں کی تعداد نے شرکت کی۔

TOPPOPULARRECENT