Tuesday , January 23 2018
Home / دنیا / برکس ممالک کے 50 بلین ڈالرس کے ترقیاتی بینک کا قیام

برکس ممالک کے 50 بلین ڈالرس کے ترقیاتی بینک کا قیام

فورٹالیزا ( برازیل ) 15 جولائی ( سیاست ڈاٹ کام ) ابھرتی ہوئی طاقتوں کی تنظیم برکس نے 50 بلین ڈالرس کے ترقیاتی بینک کے قیام کو منظوری دیدی ہے اور یہ بینک شنگھائی میں قائم ہوگا ۔ اس کے علاوہ اس بینک کا 100 بلین ڈالرس کا بحران کی صورت کا ہنگامی فنڈ بھی ہوگا ۔ برکس چوٹی کانفرنس کے مشترکہ اعلامیہ میں یہ بات بتائی گئی ۔ نئے بینک کے پہلے صدر کا تعل

فورٹالیزا ( برازیل ) 15 جولائی ( سیاست ڈاٹ کام ) ابھرتی ہوئی طاقتوں کی تنظیم برکس نے 50 بلین ڈالرس کے ترقیاتی بینک کے قیام کو منظوری دیدی ہے اور یہ بینک شنگھائی میں قائم ہوگا ۔ اس کے علاوہ اس بینک کا 100 بلین ڈالرس کا بحران کی صورت کا ہنگامی فنڈ بھی ہوگا ۔ برکس چوٹی کانفرنس کے مشترکہ اعلامیہ میں یہ بات بتائی گئی ۔ نئے بینک کے پہلے صدر کا تعلق ہندوستان سے ہوگا جبکہ بورڈ کے صدر نشین برازیل کے ہونگے ۔ چوٹی کانفرنس کے بعد جاری کردہ اعلامیہ میں یہ بات بتائی گئی ۔ اس بینک کا ابتدائی سرمایہ 50 بلین ڈالرس کا ہوگا جبکہ 100 ڈالرس کا ایک ایسا فنڈ ہوگا جو ہنگامی صورتحال میں استعمال ہوگا ۔ اس فنڈ میں برازیل ‘ روس ‘ چین ‘ ہندوستان اور جنوبی افریقہ مساوی حصہ داری ادا کرینگے ۔ ہنگامی محفوظ فنڈ ابتداء میں 100 بلین ڈالرس کا ہوگا اور اس سے رکن ممالک کو مختصر مدتی دباؤ سے نمٹنے

اور برکس کے تعاون کو فروغ دینے میں مدد کی جائیگی ۔ اس کے علاوہ عالمی معاشی صورتحال سے بھی اس کو مربوط رکھا جائیگا ۔ اس بینک اور اس فنڈ کو مغربی طاقتوں کی اجارہ داری والے عالمی بینک اور بین الاقوامی مالیاتی فنڈ کا متوازی سمجھا جارہا ہے ۔ برکس اقوام کا کہنا ہے کہ عالمی بینک اور بین الاقوامی مالیاتی فنڈ میں مزید اصلاحات کی ضرورت ہے تاکہ ابھرتی ہوئی اقوام کو وہاں رائے دہی کا حق حاصل ہوسکے ۔ ہندوستان اس بات پر ابتداء ہی سے زور دے رہا تھا کہ اس بینک میں تمام رکن ممالک کی مساوی حصہ داری ہونی چاہئے اور کسی بھی رکن کو دوسروں پر سبقت حاصل نہیں ہونی چاہئے ۔ مودی نے اس چوٹی کانفرنس سے اپنے افتتاحی خطاب میں کہا تھا کہ عالمی معاشی اداروں میں اصلاحات لائی جانی چاہئے تاکہ وہاں سماج کے متاثر ہونے والے طبقات کی مدد کرسکیں۔

TOPPOPULARRECENT