Monday , December 18 2017
Home / Top Stories / برہان وانی کے جانشین سبزار بٹ سمیت 2 جنگجو ہلاک، کشمیر میں پھر بدامنی

برہان وانی کے جانشین سبزار بٹ سمیت 2 جنگجو ہلاک، کشمیر میں پھر بدامنی

سرینگر 27مئی (سیاست ڈاٹ کام ) جنوبی کشمیر کے ضلع پلوامہ میں جنگجوؤں اور سیکورٹی فورسز کے مابین جمعہ کی شام سے جاری شدید تصادم آرائی میں حزب المجاہدین کے مہلوک کمانڈر برہان مظفر وانی کے دست راست و جانشین کمانڈر سبزار احمد بٹ کے سمیت دو جنگجوؤں کو ہلاک کیا گیا ہے ۔ دوسری جانب تصادم کے مقام سیموہ ترال میں مظاہرین اور سیکورٹی فورسز کے مابین شدید جھڑپوں کا سلسلہ جاری ہے ۔ ان جھڑپوں کے دوران سیکورٹی فورسز کی جانب سے پیلٹ فائرنگ اور آنسو گیس کے شدید استعمال کے سبب متعدد افراد کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔ سرکاری ذرائع نے یو این آئی کو مسلح تصادم کی تفصیلات فراہم کرتے ہوئے بتایا کہ ضلع پلوامہ کے سیموہ ترال میں گذشتہ رات جنگجوؤں کی جانب سے سیکورٹی فورسز کی ایک گشتی پارٹی پر حملہ کردیا۔ انہوں نے بتایا کہ سیکورٹی فورسز نے جوابی کاروائی کی جس کے بعد طرفین کے مابین لڑائی کا سلسلہ شروع ہوا۔ سرکاری ذرائع نے بتایا ‘جنگجوؤں کے حملے کے بعد سیکورٹی فورسز کی اضافی کمک سیموہ روانہ کی گئی اور جنگجوؤں کو فرار ہونے سے روکنے کیلئے سیموہ اور اس سے متصل کئی دیہات کی ناکہ بندی کردی گئی۔ انہوں نے بتایا کہ وقفہ وقفہ سے گولہ باری کا تبادلہ رات بھر جاری رہا۔ ذرائع نے بتایا کہ کچھ گھنٹوں کے وقفے کے بعد جنگجوؤں نے ہفتہ کی صبح سیکورٹی فورسز پر اس وقت شدید فائرنگ کی جب کچھ سیکورٹی فورسز نے اس مکان میں داخل ہونے کی کوشش کی جس میں جنگجو محصور تھے ۔ لڑائی کے دوران ایک مکان کے مکمل طور پر تباہ ہونے کی اطلاعات ہیں۔ سیکورٹی ذرائع نے بتایا کہ انکاؤنٹر کے دوران سبزار احمد ساکن رٹھسونہ ترال جس نے 2016ء میں برہان وانی کی جگہ لی، اُس کے سمیت دو جنگجوؤں کو ہلاک کیا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ آخری اطلاعات ملنے تک علاقہ میں جنگجو مخالف آپریشن جاری تھا۔

کشمیر کے کئی علاقوں میں  پرتشدد مظاہرے
وادی کشمیر میں ہفتہ کو حزب المجاہدین کے معروف کمانڈر سبزار احمد بٹ کی انکاؤنٹر میں ہلاکت کی خبر پھیلتے ہی درجنوں علاقوں میں پرتشدد احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ شروع ہوگیا اور وادی کے بیشتر علاقوں میں دکانیں اور تجارتی مراکز ہوگئے اور پبلک و نجی ٹرانسپورٹ سڑکوں سے غائب ہوگئی۔ ہفتہ کی صبح مختلف کاموں کے سلسلے میں اپنے گھروں سے باہرنکلنے والے لوگ عجلت میں واپس اپنے گھروں کو لوٹ گئے جبکہ تعلیمی اداروں میں تعطیل کا اعلان کرتے ہوئے طالب علموں کو دوپہر بارہ بجے سے قبل ہی تعلیمی اداروں سے رخصت کیا گیا۔

وادی میں کرفیو ، موبائل اور انٹرنیٹ بند
حزب المجاہدین کمانڈر کی ہلاکت کے بعد پرتشدد احتجاجی مظاہروں کو پیش نظر رکھتے ہوئے حکام نے وادی کے سات پولیس اسٹیشن حدود میں کل احتیاطی اقدام کے طور پر کرفیو نافذ کردیا ۔ ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ سرینگر فاروق لون نے کہا کہ تعلیمی ادارے پیر کو بند رہیں گے ۔اسی طرح بطور احتیاط ریل سرویس کو بھی معطل کیا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT