Thursday , December 14 2017
Home / Top Stories / برہم فلسطینی نے تین یہودیوں کو چاقو گھونپ کر ہلاک کردیا

برہم فلسطینی نے تین یہودیوں کو چاقو گھونپ کر ہلاک کردیا

یروشلم ،مغربی کنارہ اور دیگر مقامات پرفلسطینیوں اور اسرائیلی فورسیس میں جھڑپیں ، کئی مقامات پر فوج متعین

رملہ ۔ /22 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) اسرائیلی مقبوضہ بیت اللہ مقدس میں بڑھتی ہوئی کشیدگی کے درمیان اسرائیلی فورسیس اور فلسطینیوں کے درمیان بڑے پیمانے پر جھڑپیں شروع ہوگئیں اور ایک فلسطینی نے تین اسرائیلیوں کو ان کے گھر میں چاقو گھونپ کر ہلاک کردیا جس کے بعد اسرائیل نے مغربی کنارہ میں آج مزید فوجی سپاہیوں کو تعینات کردیا ۔ 20 سالہ فلسطینی حملہ آور کے باپ نے کہا کہ وہ سمجھتا ہے کہ اس کا بیٹا فلسطینی جانوں کے اتلاف پر مایوس اور غمزدہ ہوگیا تھا اور مسجد الاقصیٰ کے احترام و تقدس کا تحفظ کرنا چاہتا تھا ۔ اس دوران حکومت اسرائیل کے ایک عہدیدار نے الزام عائد کیا کہ فلسطینیوں کی جانب سے اسرائیل کے خلاف اکسائے جانے کے سبب تشدد کی تازہ لہر پھوٹ پڑی ہے اور اس نے امن و سکون کی بحالی میں فلسطینی قائدین سے تعاون کی خواہش کی ہے ۔ فلسطینیوں اور یہودیوں کے لئے یکساں طور پر مقدس سمجھے جانے والے اس مغربی مقام پر تنازعہ کے سبب ماضی میں بھی فلسطینیوں اور اسرائیلیوں کے درمیان متعدد پرتشدد جھڑپیں ہوئی تھیں جو تازہ تشدد کی بنیادی وجہ بھی ہیں ۔ تازہ تشدد اُس وقت پھوٹ پڑا تھا جب ایک بندوق بردار نے حرم قدس کے اندر سے فائرنگ کی تھی جس کے نتیجہ میں اسرائیل کے دو ملازمین پولیس ہلاک ہوگئے تھے ۔ اسرائیل نے جوابی کارروائی کے طور پر 37 ایکر پر محیط احاطہ کے باب الداخلہ پر میٹل ڈیٹکٹرس نصب کردیا تھا جو مزید حملوں کے تدارک کے سکیورٹی انتظامات کے تحت ناگزیر تھے ۔ بیت المقدس اور مغربی کنارہ میں گزشتہ روز نماز جمعہ کے بعد ہزاروں برہم فلسطینی سڑکوں پر نکل آئے تھے اور احتجاج کے دوران اسرائیلی سکیورٹی فورسیس سے ان کی جھڑپیں ہوئی تھیں ۔ دو سال کے دوران تشدد اور جھڑپوں کے اس بدترین واقعہ میں کم سے کم تین فلسطینی ہلاک اور سینکڑوں زخمی ہوگئے تھے ۔ اس دوران ایک برہم فلسطینی نوجوان نے جس کی شناخت عمرالعابد کی حیثیت سے کی گئی ہے ۔ مغربی کنارہ میں واقع یہودی آبادکاریوں کی بستی ملامش کی فصیل کو پھلانگ کر ایک اسرائیلی خاندان کے گھر میں گھس کر سب کو حیرت میں ڈالدیا تھا اور یہودی ہفت سبت کے عشائیہ میں مصروف تین اسرائیلیوں کو چاقو گھونپ کر ہلاک کردیا تھا ۔ اسرائیلی فوج نے کہا کہ فلسطینی حملہ آور نے ایک اسرائیلی اور اس کے دو نوجوان بیٹوں کو ہلاک اور ایک خاتون کو زخمی کردیا ۔ چیخ و پکار کی آواز سن کر پڑوسی وہاں پہونچے اور ایک یہودی نے فائرنگ کے ذریعہ عمر العابد کو زخمی کردیا جس کو اسرائیلی ہاسپٹل منتقل کیا گیا ہے ۔ فوج کی طرف سے جاری تصویر میں دکھایا گیا کہ یہودی گھر کے باورچی خانہ کے فرش پر خون جمع ہوچکا تھا اور چاقو کے ضربات سے شدید زخمی تین افراد بیہوشی کی حالت میں فرش پر پڑے ہوئے تھے ۔ اسرائیلی فوج نے حملہ آور کے گھر کی آج صبح تلاشی لی اور اس کے ایک بھائی کو حراست میں لے لیا ۔ اسرائیلی فوج کی طرف سے جاری ویڈیو فوٹیج میں اس شخص کو ہاتھوں سے ہتھکڑی اور آنکھوں پر پٹی باندھنے کے بعد کسی نامعلوم مقام کو لے جاتا ہوا دکھایا گیا ۔

TOPPOPULARRECENT