Tuesday , January 23 2018
Home / عرب دنیا / بغداد میں پرتشدد واقعات، 35افراد ہلاک

بغداد میں پرتشدد واقعات، 35افراد ہلاک

بغداد ۔ 3 جون (سیاست ڈاٹ کام) پورے عراق میں حملوں کی وجہ سے آج 35 افراد ہلاک ہوگئے جبکہ سیاستداں نئی مخلوط حکومت تشکیل دینے کی جدوجہد میں مصروف رہے۔ اپریل میں عام انتخابات منعقد ہوئے تھے۔ عراق میں بدترین تشدد کا غلبہ ہے۔ سنی شیعہ فرقہ وارانہ تصادم کی وجہ سے 2006 اور 2007ء میں لاکھوں افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ آج کی بدترین خونریزی بغداد کے مضافاتی علاقہ میں مرکوز تھی۔ بحیثیت مجموعی 8 افراد ہلاک ہوئے۔ صیانتی اور ذرائع ابلاغ کے عہدیداروں کے بموجب اسکندریہ میں عسکریت پسندوں نے 5 افراد کو ہلاک کیا جن میں سے 2 کو گولی ماری گئی جبکہ 3 افراد چاقوزنی سے ہلاک ہوئے۔ یہ واضح نہیں ہوسکا کہ مہلوکین کو حملوں کا نشانہ کیوں بنایا گیا تھا۔ یہ قصبہ بغداد کے جنوب میں ملی جلی آبادی والا قصبہ ہے جہاں 2006-07ء کے دوران شدید خونریزی ہونے کی وجہ سے اسے ’’موت کا مثلث‘‘ کہا جاتا ہے۔ بغداد کے شمالی مضافات میں صبا البور کے علاقہ میں مارٹر حملہ سے دو افراد اور ترمیا میں ایک ملازم پولیس گولی مار کر ہلاک کردیا گیا۔ صلاح الدین، نینوا اور کرکک میں 6 افراد بشمول 4 پولیس ملازمین ہلاک کئے گئے۔ اقوام متحدہ اور حکومت عراق کے اعداد و شمار کے بموجب صرف گذشتہ ماہ میں 900 افراد ہلاک ہوئے۔ جاریہ سال 4 ہزار سے زیادہ افراد ہلاک کئے گئے۔

TOPPOPULARRECENT