Thursday , June 21 2018
Home / سیاسیات / بغیر اجازت احتجاج کرنے پر سیاسی پارٹیوں پر مقدمہ

بغیر اجازت احتجاج کرنے پر سیاسی پارٹیوں پر مقدمہ

نئی دہلی۔ 9؍مارچ (سیاست ڈاٹ کام)۔ دہلی الیکشن کمیشن نے عام آدمی پارٹی کارکنوں کے بی جے پی ہیڈ کوارٹرس پر حالیہ احتجاج کا سخت نوٹ لیتے ہوئے کہا کہ یہ احتجاج بعد ازاں پُرتشدد ہوگیا تھا۔ الیکشن کمیشن نے سیاسی پارٹیوں کو انتباہ دیا کہ اگر انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کرتے ہوئے ایسے واقعات کا اعادہ ہو تو سیاسی پارٹیوں کے خلاف فوجدار

نئی دہلی۔ 9؍مارچ (سیاست ڈاٹ کام)۔ دہلی الیکشن کمیشن نے عام آدمی پارٹی کارکنوں کے بی جے پی ہیڈ کوارٹرس پر حالیہ احتجاج کا سخت نوٹ لیتے ہوئے کہا کہ یہ احتجاج بعد ازاں پُرتشدد ہوگیا تھا۔ الیکشن کمیشن نے سیاسی پارٹیوں کو انتباہ دیا کہ اگر انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کرتے ہوئے ایسے واقعات کا اعادہ ہو تو سیاسی پارٹیوں کے خلاف فوجداری مقدمہ دائر کیا جاسکتا ہے۔ انتخابی ضابطہ اخلاق 3 مارچ سے نافذ ہوچکا ہے جب کہ الیکشن کمیشن نے رائے دہی کی تواریخ کا اعلان کیا تھا۔ عام آدمی پارٹی کو احتجاج پر وجہ بتاؤ نوٹس جاری کی جاچکی ہے۔ دہلی الیکشن کمیشن نے کُل جماعتی اجلاس کے دوران حال ہی میں تمام سیاسی پارٹیوں کو کہہ دیا کہ وہ باہمی تیقن دئے ہوئے تخریب کاری کے مرض سے دُور رہیں، ورنہ اس سے ان کے مستقبل کے امکانات متاثر ہوسکتے ہیں۔

اجلاس میں چیف الکٹورل آفیسر دہلی وجئے دیو نے کہا کہ یہ واضح کیا جاچکا ہے کہ سیاسی پارٹیوں کو ایسی سرگرمیوں میں ملوث ہوکر ماحول آلودہ نہیں کرنا چاہئے۔ پہلی فرصت میں سیاسی پارٹیوں کو اپنے موقف کی وضاحت کرنی چاہئے، لیکن اگر ایسے واقعات انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کرتے ہوئے بار بار پیش آئیں تو متعلقہ سیاسی پارٹی کے خلاف فوجداری مقدمہ دائر کیا جائے گا۔ انھوں نے کہا کہ تمام سیاسی پارٹیوں کو مثالی ضابطہ اخلاق کی تمام دفعات واضح طور پر سمجھائی جاچکی ہیں اور ایک کتابچہ ان کے درمیان گشت کروایا جاچکا ہے جس میں کیا کرنا چاہئے اور کیا نہیں کرنا چاہئے، اس کی وضاحت موجود ہے۔ عام آدمی پارٹی۔ بی جے پی واقعہ بھی اس کتابچہ میں شامل کیا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT