Thursday , December 13 2018

بلاول پاکستان کے سلگتے مسائل پر توجہ دیں

نئی دہلی ۔ 27 ۔ اکٹوبر : ( سیاست ڈاٹ کام ) : بی جے پی نے آج پاکستان پیوپلز پارٹی کے نوجوان قائد بلاول بھٹو کو ہدف تنقید بناتے ہوئے کہا کہ وہ ( بھٹو ) اگر پاکستان کے سلگتے ہوئے مسائل پر اپنی توجہ مرکوز کریں تو بہتر ہوگا ۔ بجائے اس کے کہ وہ غیر ضروری طور پر بچکانہ بیانات دیتے ہوئے ہندوستانی کشمیر کو پاکستان میں شامل کرنے کی بات کہیں ۔ یاد رہے

نئی دہلی ۔ 27 ۔ اکٹوبر : ( سیاست ڈاٹ کام ) : بی جے پی نے آج پاکستان پیوپلز پارٹی کے نوجوان قائد بلاول بھٹو کو ہدف تنقید بناتے ہوئے کہا کہ وہ ( بھٹو ) اگر پاکستان کے سلگتے ہوئے مسائل پر اپنی توجہ مرکوز کریں تو بہتر ہوگا ۔ بجائے اس کے کہ وہ غیر ضروری طور پر بچکانہ بیانات دیتے ہوئے ہندوستانی کشمیر کو پاکستان میں شامل کرنے کی بات کہیں ۔ یاد رہے کہ اتوار کو لندن میں ایک ملین مارچ کا اہتمام کیا گیا تھا جو کشمیر معاملہ پر توجہ راغب کرنے کے لیے منعقد کی گئی تھی ۔ جس پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے بی جے پی ترجمان نلین کوہلی نے کہا کہ ملین مارچ کا اہتمام کرناہی ایک غلط قدم ہے اور وہ بھی ایک غلط مقام پر ۔ بلکہ مجھے تو یہ کہنا چاہئے کہ کشمیر معاملہ کے لیے مارچ کی ضرورت ہی نہیں تاہم کیا کیا جائے کہ پاکستان ہمیشہ سے کشمیر معاملہ کو عالمی رنگ دینے کی کوشش کرتا رہا ہے ۔

بلاول بھٹو کو پاکستان میں خواتین کی تعلیم ، پولیو اور دہشت گردوں سے پاک پاکستان کی تعمیر پر زیادہ توجہ مرکوز کرنا چاہئے کیوں کہ پاکستان میں فی الحال یہی سلگتے ہوئے مسائل ہیں ۔ یاد رہے کہ ملین مارچ کا اہتمام لندن کے ٹرافلگر اسکوائر سے ڈاؤننگ اسٹریٹ تک کیا گیا تھا ۔ لیکن درمیان میں یہ مارچ افراتفری کا شکار ہوگیا کیوں کہ بلاول بھٹو نے راستے میں تعمیر کئے گئے ایک عارضی شہ نشین پر ٹھہر کر کشمیر کے بارے میں بے دریغ بولنا شروع کردیا تھا جس کے بعد ملین مارچ میں حصہ لینے والوں نے شور شرابہ شروع کردیا اور پلاسٹک کی خالی بوتلیں بلاول بھٹو کی جانب پھینکنے لگے ۔ کوئی بھی ان کی تقریر سننے تیار نہیں تھا ۔ کچھ لوگ ملین مارچ میں حصہ لینے کے لیے انگلینڈ کے مشرقی علاقہ ڈربی سے آئے تھے ۔ انہوں نے برہم ہو کر کہا کہ یہ مارچ کشمیر اور کشمیریوںکی فلاح و بہبود کے لیے منعقد کیا گیا ہے ۔ بلاول بھٹو کو یہاں آنے کی قطعی ضرورت نہیں تھی ۔

TOPPOPULARRECENT