Monday , June 25 2018
Home / ہندوستان / بلبھ گڑھ میں مسلمانوں کا معاشی بائیکاٹ

بلبھ گڑھ میں مسلمانوں کا معاشی بائیکاٹ

فرید آباد 8 جون (سیاست ڈاٹ کام )بلبھ گڑھ میں فرقہ وارانہ فسادات سے متاثرہ مسلمان اپنے گھر واپس لوٹ آئے ہیں اور معمول کی سرگرمیاں شروع کرنے کی کوشش میں ہیں لیکن انہیں عملاً اکثریتی فرقہ کے سماجی بائیکاٹ کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔ یومیہ اجرت پر کام کرنے والے مسلم ورکرس گاوں چھوڑ کر جانے کے بارے میں سوچ رہے ہیں کیونکہ اکثریتی جاٹ فرقہ انہیں کام دینے یا ان کی اشیاء خریدنے سے انکار کررہا ہے۔بلبھ گڑھ کے ایک مقامی مسلم نوجوان نے کہا کہ ہم یہاں گذارے کیلئے ضروری اشیاء فروخت کیا کرتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ وہ کپڑے فروخت کرتے جبکہ ان کے دیگر ساتھی غذائی اشیاء کی تجارت کرتے ہیں ۔ لیکن تشدد کے بعد اس گاوں میں ہندووں نے ہمارے لئے دروازے بند کردیئے ہیں۔ یہاں واپس آنے کے بعد سے اب تک انہیں کچھ بھی آمدنی نہیں ہوئی ۔ چیف منسٹر ہریانہ منوہر لعل کھتر نے اتوار کو فرید آباد کا دورہ کیا اور عہدیداروں کو گاوں میں امن کی برقراری یقینی بنانے کی ہدایت دی ہے ۔ بتایا جاتا ہے کہ بلبھ گڑھ کے اٹالی گاوں میں صورتحال پرامن لیکن کشیدہ ہے اور کسی بھی لمحہ حالات بگڑ سکتے ہیں ۔ جاٹ فرقہ نے عدالت سے رجوع ہوکر مسجد کی تعمیر کے خلاف حکم التواء حاصل کرلیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT