Sunday , December 17 2017
Home / اضلاع کی خبریں / بلدیہ بنگلور میں اقتدار کیلئے بی جے پی سڑکوں پر اتر آئی

بلدیہ بنگلور میں اقتدار کیلئے بی جے پی سڑکوں پر اتر آئی

کانگریس ۔ جے ڈی ایس اتحاد کو منظوری نہ دینے گورنر سے مطالبہ
بنگلورو6؍ستمبر (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) برہت بنگلور مہانگر پالیکے میں اقتدار پر قبضہ کیلئے کانگریس اور جنتادل (ایس) کے درمیان اتحاد کی مخالفت کرتے ہوئے بی جے پی نے کل سڑکوں پر اترکر راج بھون تک ایک خاموش جلوس نکالا اور گورنر کو اس سلسلہ میں ایک میمورنڈم پیش کیا۔ بی جے پی نے کانگریس کی طرف سے میئر کا عہدہ حاصل کرنے اور ڈپٹی میئر کا عہدہ جنتادل (ایس) کو دینے کیلئے جاری سیاسی مفاہمت اور لین دین کے خلاف احتجاجی جلوس نکالتے ہوئے دوسری طرف یہ کوشش بھی جاری رکھی کہ کچھ کانگریسی اور جے ڈی ایس کاپوریٹرس کی حمایت سے بی بی ایم پی کے اقتدار پر خود ہی قابض ہوجائے۔ بی جے پی کی طرف سے ایسی مبینہ کوششوں سے بچنے کیلئے کانگریس نے اپنے تمام کارپوریٹرس کو مضافات شہر کے کسی ریسارٹ میں مقیم کردیا ہے۔ بی جے پی نے کانگریس اور جے ڈی ایس کے مابین اتحاد پر اپنی بوکھلاہٹ کا مظاہرہ کرتے ہوئے اس پر عوام کو متوجہ کرنے کیلئے احتجاجی جلوسوں کا اہتمام کیا، اور مسلسل مظاہرے کررہی ہے۔ ادھر جنتادل (ایس) سربراہ ایچ ڈی دیوے گوڈا نے آج یہ کہہ کر کانگریس کے ساتھ اپنی پارٹی کی مفاہمت کو اور مضبوط کردیا کہ جنتادل (ایس) نے کانگریس کی حمایت بلا شرط کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ضرورت پڑنے پر اس سلسلے میں وہ وزیر اعلیٰ سدرامیا سے بھی بات چیت کیلئے تیار ہیں۔ بی جے پی نے آج گورنر سے شکایت کی کہ کانگریس عوامی فرمان کے خلاف جاتے ہوئے جنتادل (ایس) سے ہاتھ ملاچکی ہے اور ہر حال میں وہ بی جے پی کو اقتدار سے باہر کرنے کیلئے کوشاں ہے۔ بی جے پی نے گورنر سے مطالبہ کیا کہ وہ کانگریس قائدین کو طلب کرکے اس طرح کی گندی سیاست نہ کرنے کے متعلق نصیحت کریں۔ گورنر نے بی جے پی کے وفد کو یقین دلایا کہ وہ اس ضمن میں کانگریس قائدین کو طلب کرکے بات چیت کریں گے۔ سابق نائب وزیر اعلیٰ آر اشوک کی قیادت میں آج بی جے پی کے ایک وفد نے گورنر واجو بھائی والا سے ملاقات کی اور بی جے پی کو اقتدار سے دور رکھنے کانگریس اور جے ڈی ایس کی مبینہ کوششوں کے متعلق اپنی شکایت پیش کی۔اس شکایت کو قبول کرتے ہوئے گورنر نے بی جے پی کے وفد سے وعدہ کیا کہ اس معاملہ میں حکومت کو ہدایت دیں گے کہ وہ انصاف سے کام لے ۔ـبی جے پی نے الزام لگایا ہے کہ وزیر اعلیٰ اور دیگر کانگریس قائدین اقتدار کا غلط استعمال کررہے ہیں۔بی بی ایم پی کے اقتدار پر قبضے کیلئے جس طرح کی کوشش کی جارہی ہے اسے ناکام بنانے کیلئے بی جے پی نے مطالبہ کیا کہ میئر کا انتخاب خفیہ ووٹنگ کے ذریعہ کروایا جائے۔ بی جے پی نے الزام لگایا کہ کانگریس نے بی بی ایم پی میں ووٹروں کی تعداد کو 255 سے بڑھا کر 260 کردی ہے۔ اپنے اراکین کونسل کو غلط طریقے سے فہرست رائے دہندگان میں شامل کیا ہے، اسی لئے فوری طور پر ان لوگوں کے نام فہرست سے نکالے جائیں۔ یہ بھی الزام لگایا کہ کانگریس نے آزاد کارپوریٹروں کو اپنے قبضے میں لے لیا ہے اور اس سے وہ جمہوریت کا گلا گھونٹ رہی ہے۔ اس دوران مسٹر آر اشوک نے کانگریس کی کارپوریٹر پدماوتی کے اس الزام پر کہ بی جے پی کی طرف سے ان کا اغوا کرنے اور انہیں لالچ دینے کی کوشش کی گئی ، سخت اعتراض کرتے ہوئے انہیں ایک لیگل نوٹس جاری کیا ہے، جس میں کہا گیا ہے کہ فوری طور پر وہ اپنے اس بیان کو واپس لیں، بصورت دیگر دس کروڑ روپیوں کا ہرجانہ طلب کرتے ہوئے ہتک عزت مقدمہ دائر کیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT