Friday , April 20 2018
Home / شہر کی خبریں / بلدیہ کی آمدنی بڑھانے کی نئی تجویز

بلدیہ کی آمدنی بڑھانے کی نئی تجویز

جاریہ ماہ سے ٹیکس ادائیگی کی جانچ ، تجارتی ادارہ جات بھی شامل
حیدرآباد ۔ 4 ۔ اپریل : ( سیاست نیوز ) : گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن نے آمدنی کو بڑھانے کے لیے انٹیگریٹیڈ سٹیزن 360 ڈگری اپروچ نامی آلہ متعارف کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ بلدیہ کا یہ احساس ہے کہ متعدد پراپرٹی ہولڈرس سرکاری سہولتوں سے استفادہ کررہے ہیں تاہم وہ پراپرٹی ٹیکس ادا نہیں کررہے ہیں ۔ بلدیہ کے منصوبہ کے مطابق نیا آلہ اس بات کی نشاندہی کرے گا اور مکان نمبر کے ساتھ اس کا جائزہ لے گا کہ ٹیکس ادا نہ کرنے والے کون کون ہیں بلدیہ نے مثال پیش کیا کہ حیدرآباد شہر میں 17 لاکھ الیکٹرسٹی کنکشن ہیں جبکہ رنگاریڈی ضلع میں 21 لاکھ 65 ہزار کنکشن ہیں جب کہ بلدیہ کے حدود میں 14 لاکھ 7 ہزار جائیدادیں رجسٹرڈ ہیں جس میں سے 13 لاکھ پراپرٹی سے الیکٹریسٹی جب کہ 5 لاکھ 58 ہزار آبرسانی کنکشن سے ہی ٹیکس وصولی عمل میں آرہی ہے ۔ اس طرح اعداد و شمار بلدیہ سے تقابل نہیں ہورہا ہے ۔ اس طرح کی صورتحال کے بعد بلدیہ نے پائیلٹ پروگرام کی بنیاد پر چند جائیداد دہندگان کو رضاکارانہ طور پر ٹیکس ادائیگی کے لیے اطلاعات روانہ کررہا ہے ۔ تاہم اس پائیلٹ پروگرام کے تجربہ کے بعد بلدیہ جاریہ ماہ سے مکمل طور پر عمل آوری کا منصوبہ بنایا ہے جس کے تحت فیلڈ انسپکشن اور جانچ پڑتال کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ اس کے ساتھ ساتھ بلدیہ ایسے تجارتی ادارہ جات کی بھی جانچ کرے گا کہ وہ جی ایس ٹی اور بلدیہ کی فیس ادا کرتے ہوئے ٹریڈ لائسنس فیس ادا کرنے سے گریز کررہے ہیں ۔ ایسے ادارہ جات کی نشاندہی کرتے ہوئے ٹیکس نا دہندگان میں شمار کرے گا اور ان کے خلاف کارروائی کرے گا ۔ دوران جانچ کمرشیل ٹیکس اور دیگر امور کا بھی جائزہ لے گا ۔۔

TOPPOPULARRECENT