Tuesday , December 18 2018

بلدیہ کی 5 روپئے میں کھانا اسکیم کا سال مکمل

شہر میں 22 مراکز کا قیام ۔ طلبا برادری کا بھی استفادہ : سومیش کمار

شہر میں 22 مراکز کا قیام ۔ طلبا برادری کا بھی استفادہ : سومیش کمار
حیدرآباد 15 مارچ ( آئی این این ) مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد نے گذشتہ ایک سال میں تقریبا 12.50 لاکھ غریب و ضرورت مند افراد کو پانچ روپئے میں کھانا فراہم کیا ہے ۔ جی ایچ ایم سی کمشنر و اسپیشل آفیسر سومیش کمار کے بموجب جی ایچ ایم سی سارے ملک میں وہ واحد کارپوریشن بن گئی ہے جس نے یہ اختراعی اسکیم شروع کی تھی تاکہ غریبوں و ضرورت مندوں کو پانچ روپئے میں کھانا فراہم کیا جائے ۔ یہ اسکیم مارچ 2014 میں اس وقت کے مئیر نے شروع کی تھی ۔ جی ایچ ایم سی نے اس اسکیم کی منصوبہ بندی اس لئے کی تھی کیونکہ ملک اور ریاست کے مختلف علاقوں سے لوگ یہاں آتے ہیں اور ان کی بہتری کو پیش نظر رکھتے ہوئے جی ایچ ایم سی نے ہرا کرشنا فاونڈیشن کے تعاون سے یہ اسکیم شروع کی تھی اور اس اسکیم نے کامیابی کا ایک سال مکمل کرلیا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ اب تک جملہ 22 فوڈ اسکیم سنٹرس قائم کئے گئے ہیں جہاں 8000 افراد شہر کے مختلف علاقوں میں دو پہر کے کھانے سے استفادہ کر رہے ہیں۔ 22 مراکز بڑے ہاسپٹلس ‘ بس اسٹانڈز اور ان مقامات پر قائم کئے گئے ہیں جہاں مزدور طبقہ رہتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ شہر کے اہم مقامات پر یہ مراکز ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ اب تو طلبا برادری بھی اس اسکیم سے فائدہ حاصل کر رہی ہے ۔ سٹی لائبریری اور چکڑ پلی میں تقریبا 500 طلبا پانچ روپئے میں کھانے کی اسکیم سے استفادہ کر رہے ہیں۔ جی ایچ ایم سی ان مراکز کو مزید وسعت دینے کا منصوبہ بنا رہی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT