Wednesday , December 12 2018

بلدی عہدیدار 12 بجے سے پہلے دفتر نہیں آتے

تاخیر سے آتے ہی ہر روزکوئی نہ کوئی بہانہ
حیدرآباد ۔ 19 ۔ دسمبر : ( سیاست نیوز ) : جی ایچ ایم سی میں اکثر عہدیداران نے 12 بجے سے پہلے دفتر نہ آنا اپنی عادت سی بنالی ہے مگر اب انہیں اپنی عادت ہر حال میں تبدیل کرنی ہوگی کیوں کہ اب اعلیٰ عہدیداران کے لیے بھی بائیو میٹرک حاضری کو لازمی کیا جانے والا ہے ۔ جی ایچ ایم سی کے مختلف شعبہ جات میں کلرک سے لے کر سپرنٹنڈنٹ ، اسسٹنٹ میونسپل کمشنر اور زونل کمشنرس کے منجملہ 4500 ملازمین اور عہدیداران ہیں جن میں سے بعض پر بنیادی فیلڈ سطح کی ذمہ داریاں ہونے کی وجہ سے ہمیشہ فیلڈ ورک پر ہونے کا بہانہ بنایا جارہا ہے یا صدر دفتر میں میٹنگ کا بہانہ بنایا جارہا ہے اور صدر دفتر کے عہدیداران سکریٹریٹ میں میٹنگ کا بہانہ بنا رہے ہیں اور وہ عہدیدار جن پر فیلڈ لیول کی ذمہ داری نہیں ہے اس کے باوجود فیلڈ ورک کا بہانہ کررہے ہیں ، تاخیر سے دفتر آنے کے بعد تھوڑے سے وقفے کے بعد ظہرانہ کے نام پر دفتر سے غائب رہتے ہیں ۔ جس کی وجہ سے عوام کو بے حد مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔ علاوہ ازیں اعلیٰ عہدیدار دفتر میں ہوں تو کلرک غائب رہتے ہیں ۔ اور عہدیدار عوام سے کہتے ہیں کہ کلرک نہیں ہیں اور آپ کا کام آن لائن میں دیکھنا ہے لہذا دوبارہ آئیں ۔ ان تمام مسائل کے حل کے لیے اعلیٰ عہدیداران نے بائیو میٹرک حاضری کو لاگو کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ صفائی کرمچاریوں کے لیے بائیو میٹرک لازمی کرنے کی وجہ سے نقلی ملازمین میں کمی آئی ہے جس کی وجہ سے جی ایچ ایم سی کو ماہانہ 2.80 کروڑ کی بچت کے اعتبار سے سالانہ 35 کروڑ روپئے کی بچت ہورہی ہے ۔ دفتری عملہ میں نقلی ہونے کا اندیشہ تو نہیں ہے مگر بروقت ملازمین کی دفتر میں حاضری کی وجہ سے کام کے اوقات میں اضافہ کے ساتھ ساتھ عوامی مسائل بھی حل ہوسکتے ہیں اور عوام کو ایک کام کے لیے بار بار وقت اور پیسہ خرچ کر کے دفاتر کے چکر کاٹنے کی نوبت نہیں آئے گی ۔ اعلیٰ عہدیداران کی جانب سے بہت جلد بلدیہ کے تمام ملازمین و عہدیداران کے لیے بائیو میٹرک حاضری کو لاگو کیا جانے والا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT