Wednesday , September 19 2018
Home / شہر کی خبریں / بلدی ملازمین کی ہڑتال ختم

بلدی ملازمین کی ہڑتال ختم

حیدرآباد۔/12فبروری (سیاست نیوز) وزیر بلدی نظم و نسق مسٹر مہیدر ریڈی کے ساتھ آج شام میونسپل ورکرس یونینوں کے قائدین کی بات چیت کامیاب رہی اور حکومت نے بلدی ملازمین کے بنیادی مطالبات کی یکسوئی سے اتفاق کرلیا ہے جبکہ ملازمین کی ماہانہ یافت میں اضافہ اہم مطالبہ تھا۔ مذاکرات کی کامیابی کے پیش نظر میونسپل ورکرس کی 5 روزہ ہڑتال عارضی طور پ

حیدرآباد۔/12فبروری (سیاست نیوز) وزیر بلدی نظم و نسق مسٹر مہیدر ریڈی کے ساتھ آج شام میونسپل ورکرس یونینوں کے قائدین کی بات چیت کامیاب رہی اور حکومت نے بلدی ملازمین کے بنیادی مطالبات کی یکسوئی سے اتفاق کرلیا ہے جبکہ ملازمین کی ماہانہ یافت میں اضافہ اہم مطالبہ تھا۔ مذاکرات کی کامیابی کے پیش نظر میونسپل ورکرس کی 5 روزہ ہڑتال عارضی طور پر ملتوی کردی گئی ہے اور کچہرے کی نکاسی اور جاروب کشی کے کام شروع کردئیے گئے ہیں۔ وزیر بلدی نظم و نسق کے ساتھ طئے پائے معاہدہ کے مطابق مجلس بلدیہ حیدرآباد کے کنٹراکٹ ورکرس کی یافت 6,700 روپے سے بڑھا کر 8500 روپئے اور دیگر بلدیات کے ورکرس کیلئے 6,700 روپے سے بڑھا کر 8300 روپئے ، اور نگر پنچایت کے حدود میں6,700 روپے سے بڑھا کر 7300روپئے تک اضافہ کیا گیا ہے۔ ای پی ایف، ای ایس آئی اور سرویس ٹیکس یکجا کرنے پر ماہانہ یافت حیدرآباد میں 11706 روپئے ،

دیگر بلدیات کیلئے 11500 روپئے اور نگر پنچایت کے حدود میں 10054 روپئے ہوگی۔مسٹر مہیدھر ریڈی نے مزید بتایا کہ بلدی ورکرس کی تنخواہوں میں اضافہ کرنے کے فیصلہ سے ادارہ جات مقامی (بلدیات) پر 145 کروڑ روپئے کے زاید مالی مصارف عاید ہوں گے۔ انہوں نے بلدی ورکرس کے دیگر مسائل بالخصوص حادثاتی انشورنس، ہفتہ میں ایک مرتبہ چھٹی دینے اور دیگر مسائل کی عاجلانہ یکسوئی پر کہا کہ حکومت ان مسائل کی یکسوئی کیلئے سنجیدگی سے ضرور غور کرے گی۔ وزیر بلدی نظم و نسق نے بتایا کہ ریاست بھر میں پائے جانے والے 60,322 کنٹراکٹ بلدی ملازمین کی روز مرہ زندگی کو پیش نظر رکھتے ہوئے ریاستی حکومت نے یہ فیصلہ کیا ہے۔ یونین کے قائدین نے اجلاس کے بعد بتایا کہ ہم اس وقت فوری رجوع بہ کار ہورہے ہیں اور ہم نے عارضی طور پر اپنی ہڑتال کو ملتوی کردیا اور حکومت کے تیقنات پر عمل آوری کے منتظر رہیں گے۔ اس اجلاس میں میئر جی ایچ ایم سی مسٹر ماجد حسین، پرنسپال سکریٹری بلدی نظم و نسق ڈاکٹر سمیر شرما،

کمشنر جی ایچ ایم سی مسٹر سومیش کمار، سی اینڈ ڈی ایم اے ڈاکٹر بی جناردھن ریڈی اور دیگر سینئر عہدیداروں کے علاوہ اے پی میونسپل ایمپلائیز اینڈ ورکرس یونینس کے قائدین موجود تھے۔ ایڈیشنل (ہیلت اینڈ سانیٹیشن) مسٹر ایل وندن کمار نے کہا کہ گذشتہ پانچ برسوں سے عدم صفائی اور عدم نکاسی کے باعث جمع شدہ کچہرے کی نکاسی اور معمول کی صفائی کا نظم بحال کرنے 4 تا 5 دن درکار ہوں گے۔ حیدرآباد میں 10,000 میٹرک ٹن کچہرا سڑکوں اور گلی کوچوں میں پڑا ہوا ہے جس کی فوری نکاسی کی ضرورت ہے۔

TOPPOPULARRECENT