Wednesday , December 12 2018

بلوچستان میں پاک فورسیس کی کارروائی ، 30 عسکریت پسند ہلاک

پشاور ، 5 جون (سیاست ڈاٹ کام) کم از کم 30 عسکریت پسندوں بشمول دو اعلیٰ کمانڈرس آج پیرا ملٹری فورسیس کی جانب سے جنوب مغربی صوبہ بلوچستان میں کی گئی تازہ کارروائی میں ہلاک ہوگئے۔ یہ آپریشن فرقہ وارانہ تشدد سے متاثرہ خطہ میں شورش پسندی کے تدارک کیلئے کیا جارہا ہے۔ صوبائی وزیرداخلہ میر سرفراز بکتی نے میڈیا کو بتایا کہ فورسیس نے کوئٹہ کے لگ بھگ 250 کیلو میٹر جنوب مشرق میں کارروائی کی جہاں شورش پسندوں کے روپوش ہونے کی اطلاع ملی تھی۔ انہوں نے کہا کہ فورسیس نے کم از کم 30 ارکان بلوچ ریپبلکن آرمی بشمول دو کمانڈروں کو بندوق کی لڑائی میں ہلاک کردیا۔

بی آر اے کا دعویٰ ہیکہ وہ اس صوبہ کے قدرتی وسائل کے استحصال اور یہاں انسانی حقوق کی مبینہ پامالی کو روکنے کوشاں ہیں۔ بکتی نے کہا کہ اس جھڑپ میں فرنٹیئر کارز کا ایک جوان بھی مارا گیا۔ انہوں نے کہا کہ عسکریت پسندوں کے 8 ٹھکانوں کو اس آپریشن میں تباہ کردیا گیا اور تقریباً 350 کیلو گرام دھماکو مادہ، 300 کیلو گرام لینڈ مائن، 50 اینٹی پرسونل مائنس، اسلحہ اور گولہ بارود کی بڑی کھیپ ضبط کی گئی۔ انہوں نے بتایا کہ تلاشی مہم کے دوران فورسیس دو یرغمالیوں کو رہا کرانے میں بھی کامیاب ہوگئے جو ان عسکریت پسندوں کی تحویل میں تھے۔ مہلوک عسکریت پسندوں کی شناختوں کا علم نہ ہوسکا لیکن بلوچ قوم پرست اکثر و بیشتر اس شورش زدہ صوبہ میں فورسیس سے لڑائی کرتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT