Tuesday , December 11 2018

بلوچستان میں پولیس نشانے پرچار اہلکار ہلاک

وئٹہ۔ 11 جون (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں فائرنگ کے ایک واقعے میں چار پولیس اہلکار ہلاک ہوگئے۔ہلاک ہونے والوں میں ایک اسسٹنٹ سب انسپکٹر بھی شامل ہے۔سی سی پی او کوئٹہ عبد الرزاق چیمہ نے جائے وقوع پر میڈیا کو بتایا کہ پولیس کے چار اہلکار پشتون آباد کے علاقے میں معمول کے گشت پر تھے کہ اس دورن انھوں ن

وئٹہ۔ 11 جون (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں فائرنگ کے ایک واقعے میں چار پولیس اہلکار ہلاک ہوگئے۔ہلاک ہونے والوں میں ایک اسسٹنٹ سب انسپکٹر بھی شامل ہے۔سی سی پی او کوئٹہ عبد الرزاق چیمہ نے جائے وقوع پر میڈیا کو بتایا کہ پولیس کے چار اہلکار پشتون آباد کے علاقے میں معمول کے گشت پر تھے کہ اس دورن انھوں نے ایک موٹر سائیکل پر سوار دو افراد کو مشکوک جان کر ان کا تعاقب کیا۔انھوں نے بتایا کہ کچھ فاصلے پر موٹر سائیکل سواروں کے دو اور مسلح ساتھی بھی موجود تھے جنھوں نے تعاقب کرنے والے پولیس اہلکاروں کی گاڑی پر فائرنگ کی جس سے اہلکار زخمی ہو گئے۔عبد الرزاق چیمہ کا کہنا تھا کہ زخمی حالت میں بھی ایک پولیس اہلکار نے حملہ آوروں کو مارنے کی کوشش کی۔ سی سی پی کے مطابق ان اہلکاروں میں سے تین شدید زخمی ہونے کے باعث جائے وقوع پر ہی ہلاک ہو گئے جبکہ چوتھے اہلکار نے ہاسپٹل پہنچنے سے پہلے راستے میں دم توڑ دیا۔قبائیلی علاقے میں پاکستانی فوج کی کارروائی ’’ضرب عضب‘‘ کے بعد سے پاکستانی فوج اور پولیس پر عسکریت پسندوں کے حملوں میں شدت پیدا ہوگئی ہے کیونکہ حکومت پاکستان کے قبائیلی علاقہ سے عسکریت پسندوں خاص طو رپر پاکستانی طالبان اور اس سے الحاق رکھنے والی دیگر تنظیموں کا صفایہ کرنا چاہتی ہے۔

خودکش حملے میں دو اہلکار ہلاک
پشاور ۔ 11 جون (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان کے صوبے خیبر پختونخواہ کے دارالحکومت پشاور میں پولیس موبائل پر ہونے والے خودکش حملے میں دو پولیس اہلکار ہلاک جبکہ ڈپٹی کمانڈنٹ فرنٹیئر ریزرو پولیس ملک طارق سمیت تین پولیس اہلکار زخمی ہو گئے ہیں۔حیات آباد تھانے کے ایس ایچ او نے میڈیا کو بتایا کہ صبح 9بجے موٹر سائیکل پر سوار خود کش حملہ آور نے پولیس کی گاڑی کو نشانہ بنایا۔انھوں نے بتایا کہ ڈپٹی کمانڈنٹ ایف آر پی ملک طارق اور دیگر زخمیوں کو حیات آباد میڈیکل کمپلیکس میں طبی امداد دی جا رہی ہے اور ان کی حالت خطرے سے باہر ہے۔ایس ایچ او کا کہنا تھا کہ دھماکے کے نتیجے میں دو کانسٹیبل ہلاک ہوئے جبکہ زخمیوں میں ڈپٹی کمانڈنٹ کے علاوہ ان کا ڈرائیور اور ایک کانسٹیبل شامل ہیں۔دوسری جانب کالعدم تحریکِ طالبان پاکستان نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کر لی ہے۔

TOPPOPULARRECENT