Saturday , November 25 2017
Home / ہندوستان / بلوچستان پر وزیراعظم کا بیان پالیسی سے انحراف نہیں

بلوچستان پر وزیراعظم کا بیان پالیسی سے انحراف نہیں

یوم آزادی تقریب سے خطاب میں مودی نے پالیسی کے مغائر بات نہیں کی، وزارت خارجہ ترجمان
نئی دہلی ۔ 18 اگست (سیاست ڈاٹ کام) یوم آزادی تقریب کے موقع پر تاریخی لال قلعہ کے فصیل سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نریندر مودی نے بلوچستان پر جو تبصرہ کیا ہے اس کے بارے میں جاری بحث کے دوران وزارت خارجہ نے آج بتایا کہ وزیراعظم مودی نے یہ بیان دیکر کسی پالیسی سے انحراف نہیں کیا ہے۔ وزارت خارجہ کے ترجمان وکاس سروپ نے کہا کہ وزیراعظم نریندر مودی نے بلوچستان اور پاک مقبوضہ کشمیر کے عوام سے اظہارتشکر کیا ہے۔ اس میں گلگت اور بلتستان کے عوام بھی شامل ہیں۔ انہوں نے گذشتہ ہفتہ کل جماعتی اجلاس کے دوران اپنے مسائل کو اجاگر کیا تھا۔ انہوں نے اس بارے میں ان سے بات چیت بھی کی ہے اور یہی بات چیت کو انہوں نے لال قلعہ فصیل سے کی گئی تقریر میں شامل کیا تھا۔ اسی وقت انہوں نے یہ بھی کہا تھا کہ وزیراعظم مودی نے بعض اشارے دیئے ہیں کہ آئندہ ان کی حکومت کا لائحہ عمل کیا ہوگا۔ انہوں نے مزید تفصیلات بتانے سے انکار کیا۔ وزارت خارجہ ترجمان نے کہا کہ میں اس مرحلہ پر آپ کو کچھ نہیں بتا سکتا۔ تاہم وزارت خارجہ امور اپنے طور پر جو کرسکتی ہے وہ کام کرے گی۔ پاک مقبوضہ کشمیر کے تمام عوام نے اور ہمارے عوام بھی اس بارے میں جو کچھ کہیں گے وہ غور کیا جائے گا۔ بلوچستان کے بارے میں مودی نے جو نشاندہی کی ہے اس پر انہوں نے کہا کہ آیا اس سے مروجہ پالیسی میں تبدیلی نہیں آئے گی۔ مجھے یہ کہنے دیجئے کہ حکومت ہند نے بلوچستان کی صورتحال پر بیان دیا ہے جیسا کہ ماضی میں بھی دیا جاتا رہا ہے۔ میرے پیشرو نے بھی اس مسئلہ پر تبصرے کئے ہیں۔ فرق صرف اس میں اتنا یہ ہیکہ اس مرتبہ مختلف پیامات ملے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT