Monday , December 11 2017
Home / ہندوستان / بنارس اور علیگڈھ یونیورسٹیوں سے لفظ ہندو، مسلم حذف کرنے کی سفارش

بنارس اور علیگڈھ یونیورسٹیوں سے لفظ ہندو، مسلم حذف کرنے کی سفارش

جامعات کے ناموں کو مذہب سے مربوط کرنے کی مخالفت ، یوجی سی کی آڈٹ رپورٹ
نئی دہلی ۔9 اکٹوبر۔( سیاست ڈاٹ کام)یونیورسٹی گرانٹس کمیشن ( یو جی سی ) کے ایک پیانل نے سفارش کی ہے کہ یونیورسٹی کے ناموں میں ہندو یا مسلم کے الفاظ کا استعمال جیسے بنارس ہندو یونیورسٹی ( بی ایچ یو ) اور علیگڈھ مسلم یونیورسٹی ( اے ایم یو ) اپنے سیکولر کردار کی جھلک پیش نہیں کرسکتے چنانچہ ان الفاظ کو حذف کردیا جانا چاہئے ۔ یہ پیانل 10 سنٹرل یونیورسٹی میں مبینہ بے قاعدگیوں کی تحقیقات کیلئے قائم کیا گیا تھا اور علیگڈھ مسلم یونیورسٹی کی آڈٹ رپورٹ میں یہ سفارشات شامل کی گئی ہیں۔ اس پیانل کے ایک رکن نے اپنی شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر کہا کہ مرکز کی طرف سے فنڈز پانے والی یونیورسٹیز سیکولر ادارہ جات ہوتی ہیں لیکن ان کے ناموں میں مذہبی ناموں سے ان کے ( سیکولر) کردار کی جھلک نہیں ملتی ۔ پیانل کے اس رکن نے کہاکہ ان یونیورسٹیوں کو سادگی کے ساتھ علیگڈھ یونیورسٹی اور بنارس یونیورسٹی کہلایا جاتا ہے یا پھر ان کے بانیوں سے موسوم کرتے ہوئے ایک نیا نام دیا جاسکتا ہے ۔ اس پیانل کی طرف سے اے ایم یو اور بی ایچ یو کے علاوہ پانڈیچری یونیورسٹی ، الہٰ آباد یونیورسٹی ، ہیم وتی نندن بہوگنا گڑھوال یونیورسٹی ، سنٹرل یونیورسٹی آف جھارکھنڈ وغیرہ کی بھی آڈٹ کی گئی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT