بنڈس لیگا : 53 میچوں کے بعد میونخ کی پہلی شکست

میونخ۔ 6 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) جرمنی کے تاریخ ساز فٹبال کلب بائرن میونخ کو بنڈس لیگا میں مسلسل 53 میچ جیتنے کے بعد شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ بائرن کو بنڈس لیگا کی کمزور ٹیم آؤگس بُرگ کو ایک گول سے شکست دے دی۔ بائرن کے کوچ پیپ گاڈیولا نے جرمن فٹبال لیگ کی کمزور ٹیم آؤگس بُرگ کے ساتھ مقابلے کے لئے نسبتاً کمزور ٹیم میدان میں اُتاری مگر نتیجہ

میونخ۔ 6 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) جرمنی کے تاریخ ساز فٹبال کلب بائرن میونخ کو بنڈس لیگا میں مسلسل 53 میچ جیتنے کے بعد شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ بائرن کو بنڈس لیگا کی کمزور ٹیم آؤگس بُرگ کو ایک گول سے شکست دے دی۔ بائرن کے کوچ پیپ گاڈیولا نے جرمن فٹبال لیگ کی کمزور ٹیم آؤگس بُرگ کے ساتھ مقابلے کے لئے نسبتاً کمزور ٹیم میدان میں اُتاری مگر نتیجہ توقع کے برعکس ثابت ہوا۔ تقریباً 18 مہینہ کے بعد بائرن کے نام پر شکست لکھی گئی۔ آخری مرتبہ بائرن کی ٹیم کو 28 اکتوبر 2012ء کو بائر لیور کوزن سے ایک کے مقابلے میں 2 گول سے شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ مبصرین کا خیال ہے کہ اس شکست سے واضح ہوگیا ہے کہ بائرن کی اگر A ٹیم مکمل طور پر باہر ہوجائے تو اس کے پاس ایک متوازن B ٹیم موجود نہیں ہے۔

بائرن کو انگلش فٹبال کلب مانچسٹر یونائٹیڈ کا سامنا ہے۔ کوارٹر فائنل کے پہلے راؤنڈ کا میچ 1-1 گول سے برابر ہوگیا تھا۔ مشیل وارنر کی ایک غلطی پر بال آؤگس برگ کے فارورڈ کھلاڑی کے ہاتھ لگی اور اس کے پاس پرساسا مولڈرس نے گول کردیا۔ یہی گول بائرن کی شکست کا سبب بنا۔ بعد میں دو تین سینئر کھلاڑی بائرن ٹیم میں شامل کئے گئے لیکن آؤکس برگ نے متوازن دفاعی کھیل کا مظاہرہ کیا۔ میچ کے بعد بائرن میونخ کے کوچ نے کہا کہ ایک روز تو ان کی ٹیم کو کسی میچ میں ہارنا ہی تھا اور اس میچ کی شکست سے ان کی ٹیم کے مجموعی مظاہرہ میں کوئی کمی واقع نہیں ہوئی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ چمپین لیگ میں چہارشنبہ کا میچ ان کی ٹیم کیلئے فائنل کا درجہ رکھتے ہوئے زندگی اور موت کی حیثیت رکھتا ہے۔ واضح رہے کہ نیور مبرگ کی ٹیم کو مؤنشن گلاڈباخ نے دو گول سے شکست دی تھی۔

TOPPOPULARRECENT