Thursday , November 23 2017
Home / Top Stories / بنکاک میں برہما مندر کے باہر دو بم دھماکے، 27 ہلاک

بنکاک میں برہما مندر کے باہر دو بم دھماکے، 27 ہلاک

بنکاک ۔ 17 ۔ اگست (سیاست ڈاٹ کام) بنکاک کے پرہجوم علاقہ میں مشہور لارڈ برہما مندر کے باہر آج دو طاقتور بم دھماکے ہوئے جس کے نتیجہ میں 27 افراد بشمول 4 غیر ملکی ہلاک ہوگئے۔ ان دو دھماکوں کے بارے میں حکومت کا یہ احساس ہے کہ ملک کی معیشت اورسیاحت کو نقصان پہنچانے کے مقصد سے کئے گئے ہیں۔ یہ دو دھماکے یراون مندر کے باہر تقریباً 7 بجے شب چند منٹ کے وقفہ سے ہوئے۔ یہ مندر ضلع چڈلوم میں لارڈ برہما سے معنون ہے۔ دھماکہ کی وجہ سے عوام میں خوف و دہشت پھیل گئی اور وہ یہاں سے فرار ہونے لگے جبکہ دھماکے کے مقام ہر طرف انسانی نعشیں اور خون نظر آرہا تھا ۔ یہ مندر بنکاک کے تجارتی مرکز میں مین روڈ پر واقع ہے اور اس کے اطر اف تین بڑے شاپنگ مالس ہیں۔ دھماکے میں کسی ہندوستانی کی ہلاکت کے بارے میں تاحال کوئی اطلاع نہیں ملی۔ یہ مقام بنکاک کے مشہور سیاحتی مقامات میں ایک ہے۔ پولیس نے بتایا کہ دھماکو آلہ مندر کے سامنے ایک کھمبے کو باندھ دیا گیا تھا اور اسے دھماکے سے ا ڑایا گیا جس کے فوری بعد موٹر بائیک بم دھماکہ ہوا اور اس کے نتجہ میں دو قریبی ٹیکسیاں دھماکہ سے اڑ گئی۔ تاہم بعض ذرائع نے بتایا کہ یہ بم برہما مندر کے روبرو سڑک پر موجود بنچ کے نیچے رکھا گیا تھا ۔ کسی بھی گروپ نے دھماکہ کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے ۔ یہ مقام گزشتہ چند سال کے دوران سیاسی احتجاجی مظاہروں کا بھی مرکز رہا۔  تھائی ٹی وی نے بتایا کہ 27 افراد ہلاک اور 80 دیگر زخمی ہوئے۔ چار غیرملکی مہلوکین کی قومیت کا پتہ نہیں چل سکا۔ وزیر دفاع پراویت وونگ سونگ نے بتایا کہ یہ ٹی این ٹی بم تھا۔ جن لوگوں نے یہ کارروائی کی انہوں نے غیر ملکیوں کا نشانہ بنایا اور اس کا مقصد سیاحت و معیشت کو نقصان پہنچانا تھا۔ پولیس نے کہا کہ یہ بم پانچ کیلو ٹی این ٹی دھماکو مادے سے تیار کیا گیا۔ دھماکہ کا اثر 40 میٹر کے رقبے تک دیکھا گیا۔ بنکاک  پوسٹ نے پولیس کے حوالہ سے بتایا کہ مزید ایک اور بم کو اسی علاقہ میں ناکارہ بنادیا گیا ۔
نریندر مودی نے بم حملہ کی مذمت کی
نئی دہلی ۔ 17 ۔ اگست (سیاست ڈاٹ کام)وزیراعظم نریندر مودی نے تھائی لینڈ کے دارالحکومت بنکاک میں ہندو مندر کے باہر بم دھماکہ کی مذمت کی ۔ انہوں نے ٹوئیٹر پر لکھا کہ مہلوکین کے ارکان خاندان سے انہیں ہمدردی ہے اور وہ زخمیوں کی جلد صحت یابی کی تمنا کرتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT