Thursday , September 20 2018
Home / سیاسیات / بنگالی وزیر کا پنجاب نیشنل بینک اسکام کے ملزم میہول سے تعلق

بنگالی وزیر کا پنجاب نیشنل بینک اسکام کے ملزم میہول سے تعلق

ممتابنرجی حکومت کو اسکام سے جوڑنے کی کوشش، اسٹیٹ بی جے پی کا بیان

کولکتہ، 19فروری (سیاست ڈاٹ کام) پنجاب نیشنل بینک میں ہزارو کروڑ روپے اسکام کا معاملہ سامنے آنے کے بعد سے ہی سیاسی بیان بازی کا سلسلہ جاری ہے ۔جہاں ایک طرف پنجاب نیشنل بینک گھوٹالے کیلئے وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی مودی حکومت کی سخت تنقید کررہی ہیں اور مرکزی جانچ ایجنسی کے بجائے اس گھوٹالے کی جانچ کا مطالبہ کسی آزاد ایجنسی سے کرانے کا مطالبہ مسلسل کررہی ہیں وہیں اب بنگال بی جے پی کے ریاستی صدر دلیپ گھوش نے آج ایک تصویر جاری کرکے اس اسکام کو ترنمول کانگریس سے جوڑنے کی کوشش کی ہے ۔وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے مودی حکومت کی سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ نوٹ بندی کے زمانے زعفرانی پارٹی کی سرپرستی میں بڑے پیمانے پر منی لانڈرنگ ہوئی ہے ۔خیال رہے کہ ممبئی میں واقع پنجاب نیشنل بینک کے ایک برانچ سے ڈائمنڈ جیولرس نیرو مودی نے لیٹر آف انڈر ٹیکنگ حاصل کرکے کئی ہزار کروڑ روپے کا گھوٹالہ کرنے کے بعد ملک سے فرار ہوگئے ہیں ۔ممتا بنرجی نے ٹوئیٹ کرتے ہوئے کہا تھا کہ نوٹ بندی کے زمانے پر بینکوں سے بڑے پیمانے پر روپے کا لین دین کیا گیا ہے ۔اب بنگال بی جے پی کے ریاستی صدر دلیپ گھوش نے ایک تصویر پوسٹ کی ہے جس میں ریاستی وزیر خزانہ امیت مترا اور پنجاب نیشنل بینک گھوٹالے کے ایک اہم ملزم میہل چوکسی ایک ساتھ کھڑے ہوئے نظر آرہے ہیں ۔گھوش نے دعویٰ کیا ہے کہ ترنمول کانگریس بھی اس گھوٹالے میں ملوث ہے ۔میہول چوکسی بنگال بزنس سمٹ 2017ممبئی میں مدعو تھے اور یہ تصویر اسی موقع کی ہے ۔گھوش نے کہا کہ اس تصویر میں دونوں کافی قریب نظر آرہے ہیں۔ تاہم ترنمول کانگریس نے ان الزامات کو سرے سے خارج کردیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT