بنگال میں داخلہ پر امتناع : پروین توگاڑیہ چراغ پا

کولکتہ ۔ 2 اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) مغربی بنگال میں داخلہ پر امتناع عائد کئے جانے پر چیف منسٹر ممتابنرجی پر تنقید کرتے ہوئے وی ایچ پی لیڈر پروین توگاڑیہ نے آج کہا کہ آیا ممتابنرجی اقلیتی مذہب سے تعلق رکھنے والے ان افراد کے خلاف بھی کارروائی کرینگی جو سڑکوں پر عبدات کرتے ہیں اور عبادتگاہوں میں بڑے بڑے اجتماع منعقد کرتے ہیں ؟

کولکتہ ۔ 2 اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) مغربی بنگال میں داخلہ پر امتناع عائد کئے جانے پر چیف منسٹر ممتابنرجی پر تنقید کرتے ہوئے وی ایچ پی لیڈر پروین توگاڑیہ نے آج کہا کہ آیا ممتابنرجی اقلیتی مذہب سے تعلق رکھنے والے ان افراد کے خلاف بھی کارروائی کرینگی جو سڑکوں پر عبدات کرتے ہیں اور عبادتگاہوں میں بڑے بڑے اجتماع منعقد کرتے ہیں ؟ ۔ توگاڑیہ نے کہا کہ آیا ممتابنرجی کسی اقلیتی لیڈر کو گرفتار کرینگی جو جمعہ کو بڑے اجتماعات میں خطبات دیتے ہیں اور ان افراد کو گرفتار کرینگی جو سڑکوں پر عبادت کرتے ہیں ؟ ۔ انہوں نے کہا کہ ان کے داخلہ پر امتناع عائد کرنے ریاست کے ہر ضلع میں دفعہ 144 نافذ کرنا ممتا بنرجی کی غلطی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ 5 اپریل کو دیناج پور میں ایک ریلی سے خطاب کرنے والے تھے جہاں وی ایچ پی کے 2000 کارکن شریک ہونے والے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ ان کے داخلہ پر امتناع اور دفعہ 144 کا نفاذ چیف منسٹر مغربی بنگال ممتابنرجی کی غلطی ہے اور اس سے انہیں نقصان ہوگا ۔

TOPPOPULARRECENT