بنگلور ۔ ناندیڑ ایکسپریس کے اے سی کوچ میں آتشزدگی 26 مسافرین ہلاک

اننت پور ۔ 28 ۔ دسمبر : ( پی ٹی آئی ) : بنگلور ۔ ناندیڑ ایکسپریس کے ایک ایرکنڈیشنڈ کوچ میں آج صبح کی اولین ساعتوں کے دوران اچانک مہیب آگ بھڑک اٹھنے کے سبب بشمول دو بچے کم سے کم 26 افراد زندہ جھلس کر فوت ہوگئے ۔

اننت پور ۔ 28 ۔ دسمبر : ( پی ٹی آئی ) : بنگلور ۔ ناندیڑ ایکسپریس کے ایک ایرکنڈیشنڈ کوچ میں آج صبح کی اولین ساعتوں کے دوران اچانک مہیب آگ بھڑک اٹھنے کے سبب بشمول دو بچے کم سے کم 26 افراد زندہ جھلس کر فوت ہوگئے ۔

دیگر 13 افراد بری طرح زخمی ہوگئے ہیں ۔ یہ المناک واقعہ اس وقت پیش آیا جب بنگلور ۔ ناندیڑ ایکسپریس آج صبح کی اولین ساعتوں کے دوران آندھرا پردیش کے ضلع اننت پور میں سری ستیہ سائی پرشانتی نیلائم ریلوے اسٹیشن کے قریب سے گذر رہی تھی ۔ بیان کیا جاتا ہے کہ انجن سے چوتھے ڈبہ اے سی 3 ٹائر کوچ B-1 میں رات 3-45 بجے یہ آگ بھڑک اٹھی تھی جب اکثر مسافرین محو خواب تھے ۔ تاہم ڈرائیور نے حاضر دماغی سے کام لیتے ہوئے اس بدنصیب بوگی میں اچانک آگ بھڑک اٹھنے کا پتہ چلالیا ۔ اور کتہ چیرو اسٹیشن کے قریب ٹرین کو روک دیا جہاں فورا اس ڈبہ کو باقی ماندہ بوگیوں سے علحدہ کردیا گیا ۔

جس کے نتیجہ میں آگ کو دیگر بوگیوں تک پھیلنے سے روک لیا گیا ۔ اننت پور کے ڈسٹرکٹ سپرنٹنڈنٹ پولیس ایس سنتھل کمار نے پی ٹی آئی سے کہا کہ اس حادثہ میں تاحال 26 افراد فوت ہوچکے ہیں ۔ راحت و امدادی کام جاری ہیں ۔ گنتکل ریلوے پولیس کے ایس پی جناردھن نے کہا کہ 13 زخمیوں کو اننت پور کے مختلف دواخانوں میں شریک کیا گیا ہے ۔ آتشزدگی کی اصل وجوہات کا ہنوز علم نہیں ہوسکا ہے لیکن ریلوے بورڈ کے چیرمین ارونیندرا کمار نے کہا کہ بادی النظر میں دو وجوہات ہوسکتی ہیں ایک برقی شارٹ سرکٹ دوسری بوگی میں آتش گیر مادہ ( ایندھن ) کی موجودگی ممکن ہے ۔ وزیر ریلوے ملیکارجن کھرگے نے اس واقعہ کو انتہائی المناک و بدبختانہ قرار دیا اور کمشنر ریلوے سیفٹی کے ذریعہ تحقیقات کا حکم دیا ۔ انہوں نے مہلوکین کے خاندانوں کو فی کس پانچ لاکھ روپئے ایکس گریشیا دینے کا اعلان بھی کیا ۔ آندھرا پردیش کے ڈائرکٹر جنرل پولیس ( ڈی جی پی ) بی پرساد راؤ نے کہا کہ ’ ابتدائی تحقیقات سے پتہ چلا ہے کہ ایرکنڈیشنڈ یونٹ میں برقی شارٹ سرکٹ سے یہ حادثہ پیش آیا ہے ‘ ۔

ساوتھ سنٹرل ریلوے نے کہا کہ 16 کوچس پر مشتمل یہ ٹرین کل رات 10-45 بجے بنگلور سے روانہ ہوئی تھی اور آگ سے خاکستر ہونے والے کوچ میں 65 مسافر سوار تھے ۔ ریلوے حکام نے کہا کہ نعشیں بنگلور کے وکٹوریہ ہاسپٹل کو منتقل کردی گئی تھیں ۔ وزیر اعظم منموہن سنگھ نے اس المناک حادثہ اور انسانی جانوں کے اتلاف پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا ۔ انہوں نے وزیر ریلوے ملک ارجن کھرگے سے ربط پیدا کرتے ہوئے مقام واقعہ پر جاری راحت رسانی کے کاموں کے بارے میں معلومات حاصل کیا ۔ وزیر ریلوے نے کہا کہ مہلوکین کے ورثاء کو فی کس پانچ لاکھ روپئے ایکس گریشیا کا اعلان کیا گیا ہے ۔ شدید زخمیوں کو ایک لاکھ اور معمولی زخمی ہونے والے افراد کو فی کس 50,000 روپئے امداد دی جائے گی ۔ اننت پور کے ڈسٹرکٹ میڈیکل اینڈ ہیلت آفیسر ڈاکٹر سی رام سبا راو نے کہا کہ جھلس جانے کے سبب ناقابل شناخت ہوجانے والی نعشوں کے رانوں کی ہڈیوں کو ڈی این اے ٹسٹ کے لیے محفوظ کرلیا جائے گا ۔ ضلع اننت پور میں یہ دوسرا ٹرین حادثہ ہے ۔ گذشتہ سال مارچ میں پینوکنڈہ کے قریب بنگلور جانے والی ہمپی ایکسپریس کے ایک ٹہری ہوئی مال گاڑی سے تصادم کے نتیجہ میں 23 افراد ہلاک ہوگئے تھے ۔ جب اس کا ڈرائیور صبح کی اولین ساعتوں کے دوران اسٹیشن پر موجود سنگل کو نظر انداز کرتے ہوئے ٹرین کو آگے بڑھا دیا تھا ۔۔

TOPPOPULARRECENT