Thursday , November 23 2017
Home / دنیا / بنگلہ دیش میں انتخابی تشدد ۔ 13 افراد ہلاک ۔ تقریبا ایک ہزار زخمی

بنگلہ دیش میں انتخابی تشدد ۔ 13 افراد ہلاک ۔ تقریبا ایک ہزار زخمی

ڈھاکہ 24 مارچ ( سیاست ڈاٹ کام ) بنگلہ دیش میں بالکل پہلی مرتبہ پارٹی بنیادوں پر ہوئے مجالس مقامی انتخابات میں ماقبل انتخابات تشدد میں 13 افراد ہلاک ہوگئے جبکہ ایک ہزار کے لگ بھگ زخمی ہوئے ہیں۔ پولیس نے یہ بات بتائی ۔ کہا گیا ہے کہ سب سے زیادہ تشدد جنوبی ساحلی شہر متھابریہ میں ہوا جہاں منگل کو برسر اقتدار جماعت کے حامیوں کی کثیر تعداد نے پولیس پر حملہ کیا تھا اور بارڈر گارڈز کو نشانہ بناتے ہوئے بیالٹ باکس چھین لئے تھے ۔ متھابریہ میں ہلاکت خیز تشدد کے واقعات میں کم از کم پانچ افراد ہلاک اور دوسرے کئی زحمی ہوگئے تھے ۔ اس کے علاوہ دو افراد کوکس بازار میں ایک اور ایک فرد جھلاکتھی ‘ نیرا کونا اور سراج گنج میں انتخابات سے متعلق تشدد میں ہلاک ہوگئے ہیں ۔پولیس کو اس وقت فائرنگ کرنی پڑی جب برسر اقتدار پارٹی کے کارکنوں نے وہاں سے منتشر ہونے سے انکار کردیا جب انہیں اطلاع ملی تھی کہ ان کے امیدوار کو شکست ہو رہی ہے ۔ تین افراد اس فائرنگ میں برسر موقع ہلاک ہوئے جبکہ تین دوسرے دواخانہ جاتے ہوئے جانبر نہ ہوسکے ۔ ملک کی اصل اپوزیشن جماعت بنگلہ دیش نیشنلسٹ پارٹی نے ان انتخابات کو محض دکھاوا قرار دیا اور کہا کہ انتخابات کے دوران زبردست تشدد ہوا ہے اور انتخابی نظام میں کئی تبدیلیاں کردی گئی تھیں۔ انتخابات پہلی مرتبہ پارٹی خطوط پر منعقد ہوئے ۔ 712 یونین کونسل میں اپوزیشن کو صرف 30 نشستوں پر کامیابی ملی تھی ۔ بی این پی کے ترجمان اسد الزماں ریپون نے کہا کہ ہم پہلے ہی کہہ چکے تھے کہ نئے نظام سے تشدد کو فروغ ملے گا اور ہمارے اندیشے درست ثابت ہوئے ۔ عوامی لیگ کے کارکنوں نے ایک کالج سنٹر کو محاصرہ میں لے رکھا تھا جہاں ووٹوں کی گنتی جار ی ہے ۔ پولیس نے یہ بات بتائی ۔

TOPPOPULARRECENT