Wednesday , September 26 2018
Home / دنیا / بنگلہ دیش میں بی این پی کی پُرتشدد ہڑتال‘9افراد زندہ جھلس کر فوت

بنگلہ دیش میں بی این پی کی پُرتشدد ہڑتال‘9افراد زندہ جھلس کر فوت

ڈھاکہ۔7فبروری( سیاست ڈاٹ کام) بنگلہ دیش میں آج تین بچوں کے بشمول 9افراد زندہ جھلس کر فوت ہوگئے ‘جب کہ اپوزیشن بنگلہ دیش نیشنلسٹ پارٹی ( بی این پی ) کے ہڑتالی کارکنوں نے مسافرین سے کھچا کھچ بھری ہوئی ایک بس اور ایک ٹرک پر پٹرول بموں سے حملہ کردیا ۔ اس ملک میں گذشتہ ماہ سے تاحال 75 افراد کی ہلاکت کا سبب بننے والے سیاسی تشدد کے درمیان یہ تا

ڈھاکہ۔7فبروری( سیاست ڈاٹ کام) بنگلہ دیش میں آج تین بچوں کے بشمول 9افراد زندہ جھلس کر فوت ہوگئے ‘جب کہ اپوزیشن بنگلہ دیش نیشنلسٹ پارٹی ( بی این پی ) کے ہڑتالی کارکنوں نے مسافرین سے کھچا کھچ بھری ہوئی ایک بس اور ایک ٹرک پر پٹرول بموں سے حملہ کردیا ۔ اس ملک میں گذشتہ ماہ سے تاحال 75 افراد کی ہلاکت کا سبب بننے والے سیاسی تشدد کے درمیان یہ تازہ ترین واقعہ ہے ۔ اپوزیشن لیڈر خالدہ ضیاء کی بی این پی کی طرف سے سڑکوں کی ناکہ بندی کا احتجاج آج 29ویں دن میں داخل ہوگیا ۔ جنوب مغربی علاقہ باری سال میں آج صبح ایک ٹرک پر پٹرول بم حملہ میں کم سے کم تین افراد زندہ جھلس کر فوت ہوگئے ۔ رات دیر گئے پیش آئے دوسرے واقعہ میں بشمول تین بچے ‘ چھ افراد اس وقت زندہ جھلس کر فوت اور دیگر 30زخمی ہوگئے

جب اپوزیشن بی این پی کارکنوں نے شمال مغربی علاقہ گائینڈہ میں مسافرین سے کھچا کھچ بھری بس پر پٹرول بم حملہ کردیا ۔ تازہ ترین حملے اُس وقت ہوئے جس سے چند گھنٹوں قبل بی این پی نے وزیراعظم شیخ حسینہ کی عوامی لیگ حکومت کے خلاف کل سے 72گھنٹوں کیلئے ایک مہم میں شدت پیدا کرنے کا اعلان کیا تھا ۔ یہ عام ہڑتال سڑکوں کی ناکہ بندی کے ساتھ جاری رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔وزیراعظم شیخ حسینہ کو مستعفی ہوتے ہوئے ازسرنو عام انتخابات کا اعلان کرنے کیلئے مجبور کرنے کے مقصد سے بی این پی نے سڑکوں کی ناکہ بندی مہم کا آغاز کیا تھا اور ملک گیر ٹرانسپورٹ ہڑتال کے دوران تشدد کی یہ تازہ ترین لہر پھوٹ پڑی ہے ۔ بی این پی اب عملاً ایک مایوس کن اور غیریقینی صورتحال کی شکار ہوچکی ہے ۔

اس نے گذشتہ سال منعقدہ عام انتخابات کا بائیکاٹ کیا تھا اور شیخ حسینہ کی عوامی لیگ کو کامیابی حاصل ہوئی تھی ‘ تاہم خالدہ ضیاء کی جماعت بی این پی اب حکومت سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کررہی ہے ‘ تاہم شیخ حسینہ نے اپنی حریف کے مطالبہ کو مسترد کرتے ہوئے واضح کردیا کہ انتخابات مقررہ وقت پر 2019ء میں ہوں گے اور بی این پی کی طرف سے جاری پُرتشدد مہم کے آگے عوامی لیگ حکومت گھٹنے نہیں ٹیکے گی ۔ وزیر اعظم نے اپنی سیاسی حریف خالدہ پر سخت تنقید میں کہا کہ ’’ ان ( خالدہ ) میں اب اچھائی اور برائی کے درمیان کوئی تمیز باقی نہیں رہی ہے ‘ وہ پاگل ہوچکی ہیں‘‘۔ اس دوران اقوام متحدہ نے ان دو لڑاکو بیگمات کے درمیان صلح صفائی کیلئے اپنی کوششیں جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT