Tuesday , September 25 2018
Home / اضلاع کی خبریں / بودھن کے بلدی حلقوں میں ہمہ رُخی مقابلے کا امکان

بودھن کے بلدی حلقوں میں ہمہ رُخی مقابلے کا امکان

تمام سیاسی جماعتوں میں ایک سے زائد پارٹی ٹکٹ کے دعویدار

تمام سیاسی جماعتوں میں ایک سے زائد پارٹی ٹکٹ کے دعویدار

بودھن۔/6مارچ، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) بودھن شہر میں گذشتہ چار سال کے دوران 10769 رائے دہندوں کا اضافہ ہوا۔ سال 2011 کے دوران بودھن شہر کے 35بلدی حلقوں میں 45100 رائے دہندگان موجود تھے لیکن یکم جنوری 2014 کے دوران رائے دہندگان کی یہ تعداد بڑھ کر 55869 ہوگئی۔ سال 2012ء میں رائے دہندگان کی تعداد میں معمولی اضافہ ہوا تھا یعنی 46205 رائے دہندگان درج تھے اور سال 2013 کو ان کی تعداد میں اچانک اضافہ ہوتے ہوئے 52444 ہوگئی اور اب ماہ مارچ کے دوران ہونے والے بلدی الیکشن میں رائے دہندگان کی تعداد 55869 ہے۔ سب سے زیادہ رائے دہندگان بلدی حلقہ نمبر 15 میں ہے جہاں 3421 رائے دہندگان درج فہرست ہیں جن میں خواتین کی تعداد1696 اور مرد رائے دہندگان 1725 ہے۔ یہ بلدی حلقہ جنرل قرار دیا گیا۔ اس بلدی حلقہ میں کما طبقہ ( آندھرا کے سٹلرس) کی اکثریت ہے جبکہ دوسرے نمبر پر مسلم اور اس طرح زراعت پیشہ اکثریتی طبقہ کے علاوہ تقریباً ایک سو شیڈول کاسٹ کے مکانات اس بلدی حلقہ میں موجود ہیں اور سب سے چھوٹا بلدی حلقہ نمبر 18 ہے جہاں صرف 768 رائے دہندگان موجود ہیں جن میں387خواتین اور 381مرد ووٹرس ہیں۔

یہ بلدی حلقہ عام خاتون کیلئے مختص کیا گیاہے۔ اس بلدی حلقہ نمبر 18کے علاوہ بلدی حلقہ 6جہاں صرف 858 اور بلدی حلقہ نمبر 24 وہاں بھی 858 رائے دہندگان موجود ہیں۔ بلدی حلقہ نمبر 6ایس سی جنرل کیلئے اور 24 بی سی خاتون کیلئے مختص کیا گیا۔ ان کے علاوہ بلدی حلقہ نمبر 11، 16، 20اور 35میں بھی رائے دہندگان کی تعداد دو ہزار سے زائد ہے۔ اس مرتبہ بودھن شہر کے بیشتر بلدی حلقوں میں ہمہ رخی مقابلے ہونے کے امکانات ہیں۔ گذشتہ عام انتخابات میں صرف دو ارکان بلدیہ آزاد منتخب ہوئے تھے جو بعد میں کانگریس پارٹی میں شامل ہوگئے تھے۔ اس مرتبہ تقریباً تمام سیاسی جماعتوں میں ہر ایک بلدی حلقہ میں ایک سے زائد امیدوار پارٹی ٹکٹ کے دعویدار ہیں۔ بعض قائدین پارٹی ٹکٹ نہ ملنے کی صورت میں بطور آزاد امیدوار میدان میں اُترنے کی تیاریاں کررہے ہیں۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT