Monday , December 18 2017
Home / اضلاع کی خبریں / بودھن ۔بیدر ریلوے لائین پانچ دہوں سے نظر انداز

بودھن ۔بیدر ریلوے لائین پانچ دہوں سے نظر انداز

بودھن /23 فروری ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) پارلیمنٹ کے سالانہ اجلاس میں بودھن ، بیدر ریلوے لائین کی توسیع کے کاموں کی تجاویز کو گذشتہ پانچ دہوں سے نظر انداز کیا جاتا رہا ہے ۔ ہر سالانہ اجلاس سے قبل ارکان پارلیمنٹ اس بین ریاستی ریلوے لائین کی توسیعی کیلئے عوام الناس سے بجٹ میں رقمی منظوری حاصل کرنے کا تیقن دیتے ہیں لیکن اجلاسوں کے دوران بودھن تا بیدر ریلوے لائین کے کاموں کے تعلق سے اصل موقع پر ریلوے لائین کے توسیعی کاموں کو نظر انداز کرتے ہوئے ہمارے ارکان پارلیمنٹ ظہیرآباد مسٹر بی بی پاٹل کے حلقہ پارلیمنٹ سے گذرتے ہوئے یہ لائین پڑوسی ریاست کرناٹک میں داخل ہوتی ہے ۔ گذشتہ سالانہ اجلاس سے قبل مسٹر پاٹل نے اپنے ایک انٹرویومیں بودھن تا بیدر ریلوے لائین تقریباً 138 کیلومیٹر کی تعمیر کیلئے رقمی منظوری حاصل کرنے کے عزائم کا اظہار کیا تھا ۔ لیکن وہ ناکام رہے ۔ صرف سروے کے کاموں کی تکمیل ہوئی جو تقریباً 20 سالوں سے جاری تھی ۔ پہلے مرحلے کے تعمیری کاموں کیلئے 129 کروڑ روپئے رقمی تخمینہ رقم کی تجاویز تیار کئے گئے ۔ اب دیکھنا یہ ہے کہ ہمارے معزز ارکان پارلیمنٹ مسٹر بی بی پاٹل اور محترمہ کے کویتا تقریباً 70 سالوں سے زیر التواء بودھن ، بیدر ریلوے لائین کے توسیع کاموں کیلئے رقمی منظوری حاصل کرنے میں کس حد تک کامیاب ہوتے ہیں ۔ نظام آباد، بودھن ، نظام دور حکومت میں ریلوے لائین کی تعمیر عمل میں آئی تھی ۔ تب سے ہی بودھن تا بیدر ریلوے لائین کی توسیع کیلئے تجاویزیں تیار کی جاتی رہی ۔ پٹریوں کے توسیعی کاموں کی تکمیل پر بودھن ڈیویژن کے پسماندہ اسمبلی حلقہ جات بانسواڑہ اور جوکل کے علاوہ میدک ضلع کے حلقہ اسمبلی نارائن کھیڑ اور پڑوسی ریاست مہاراشٹرا کے تعلقہ دیگلور اور حلقہ اسمبلی ظہیرآباد کے پسماندہ مواصعات کی عوام کو نئی ریلوے لائین کی تعمیر سے سہولتیں حاصل ہوگی ۔

TOPPOPULARRECENT