Wednesday , December 12 2018

بوس پر استعفیٰ کیلئے دباؤ : پارتھو چٹرجی

بردوان ۔ 5 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) مغربی بنگال کے وزیرتعلیم پارتھو چٹرجی نے آج کہا کہ رکن پارلیمنٹ سرنجوئے بوس پر جنہوں نے ایک دن قبل ترنمول کانگریس کے استعفیٰ دے دیا ہے جبکہ انہیں شردھا اسکیمات کے سلسلہ میں ضمانت پر رہا کیا گیا تھا۔ اب ان پر دباؤ ڈالا جارہا ہیکہ وہ پارٹی اور پارلیمنٹ کی رکنیت سے بھی مستعفی ہوجائیں۔ چٹرجی بردوان یونی

بردوان ۔ 5 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) مغربی بنگال کے وزیرتعلیم پارتھو چٹرجی نے آج کہا کہ رکن پارلیمنٹ سرنجوئے بوس پر جنہوں نے ایک دن قبل ترنمول کانگریس کے استعفیٰ دے دیا ہے جبکہ انہیں شردھا اسکیمات کے سلسلہ میں ضمانت پر رہا کیا گیا تھا۔ اب ان پر دباؤ ڈالا جارہا ہیکہ وہ پارٹی اور پارلیمنٹ کی رکنیت سے بھی مستعفی ہوجائیں۔ چٹرجی بردوان یونیورسٹی کے جلسہ تقسیم اسناد سے شرکت کیلئے آئے ہوئے تھے۔ ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ درست ہیکہ وہ بیمار تھے اور ان پر استعفیٰ دینے کیلئے دباؤ ڈالا جارہا تھا۔ سرنجوئے کو خصوصی کرائم برانچ میں گرفتار کرلیا تھا۔ گذشتہ سال 21 نومبر کو سردھا اسکام کے سلسلہ میں ان کی گرفتاری عمل میں آئی تھی۔ اس سوال پر کہ اسکول سرویس کمیشن امتحان منعقد کیا جانا چاہئے یا نہیں ۔ چٹرجی نے کہا کہ انہوں نے کئی مرتبہ مرکزی وزیر برائے فروغ انسانی وسائل سمرتی ایرانی کو اس معائلہ کئی مکتوب روانہ کئے ہیں لیکن انہیں ایک کا بھی جواب نہیں تھا۔ جلسہ تقسیم اسناد میں مہمان خصوصی تھے لیکن انہوں نے یونیورسٹی کے گیسٹ ہاؤس میں قیام نہیںکیا ۔

TOPPOPULARRECENT