Monday , June 25 2018
Home / اضلاع کی خبریں / بوگس معذوری سرٹیفکیٹ کے حامل ملازمین کے خلاف تحقیقات

بوگس معذوری سرٹیفکیٹ کے حامل ملازمین کے خلاف تحقیقات

جانچ کیلئے سدرم کیمپ کا اہتمام ، کریم نگر ضلع کلکٹر نیتو کماری پرساد کے احکامات

جانچ کیلئے سدرم کیمپ کا اہتمام ، کریم نگر ضلع کلکٹر نیتو کماری پرساد کے احکامات
کریم نگر /19 مارچ ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) بوگس معذوری کے سرٹیفکیٹ پیش کرتے ہوئے مختلف محکمہ جات میں برسر خدمت سرکاری ملازمین اور سرکاری اساتذہ حکومت کی رعایت سے استفادہ کرتے ہوئے عوامی فنڈ حاصل کر رہے ہیں ۔ اس تعلق سے کئی ایک شکایتیں ہیں ۔ ضلع میں 35 ہزار سے زائد ملازمین ٹیچرس کام کر رہے ہیں ۔ اس میں اساتذہ کی تعداد 13500 ہے ۔ اس میں سے 4 ہزار ملازمین ٹیچرس معذور ہونے کا سرٹیفکیٹ پیش کرکے حکومت کی رعایت سے استفادہ کرنے کا الزام ، تحقیقی ریکارڈ ہے ۔ اس بات کا پتہ چلایا گیا ہے ۔ اس طرح ہر ایک کو جعلی سرٹیفکیٹ سے تنخواہ کے علاوہ 9 سو روپئے مزید الاونس 100 سے 200 تک پیشہ ورانہ ٹیکس میں رعایت ، ایک لاکھ آمدنی میں رعایت ترقی 3 فیصد ریزرویشن ، تبادلہ میں اولین ترجیح ، آر ٹی سی اور ریلوے سفر میں 50 فیصد رعایت جیسی مختلف سہولتوں سے استفادہ کر رہے ہیں ۔ حالیہ تنخواہوں میں ترمیم کے معاہدے کے سبب بھی 18 سو تک اضافہ ہوجانے کا امکان ہے۔ اسی کے ساتھ دیگر رعایتوں میں شاید کچھ اضافہ ہو ۔ اس وجہ سے جو افراد ملازمت بالکل صحت مند ہیں ۔ کوئی بھی جسمانی خامی نہیں ہے ۔ لیکن اس کے باوجود معذور ہونے کا سرٹیفکیٹ حاصل کرلئے ہیں ۔ سابق میں وتیدیا ودھانہ پریشد کے زیر اہتمام میڈیکل بورڈ اس طرح کے معذوری کے سرٹیفکیٹ جاری کرتے تھے ۔ اس طریقہ کار کی خامیوں کی وجہ سے کچھ حریص بدعنوان ، بے ایمان سرکاری ملازمین متعلقہ عہدیادروں کو کچھ دے دلاکر جھوٹ کے سرٹیفکیٹ معذور نہ ہونے کے باوجود جسمانی کوئی نہ کوئی خامی بتلاکر سرٹیفکیٹ حاصل کرتے ہوئے داخل کرکے حکومت کی رعایت سے فائدہ اٹھاتے آرہے ہیں ۔ اس کی شکایتیں مل رہی تھیں ۔ لیکن کوئی توجہ نہیں دے رہا تھا ۔ یعنی سبھی کی ملی بھگت سے یہ کاروبار جاری ہیں ۔ قاعدے کے حساب سے 40 فیصد سے زائد جسمانی نقص ہوتو معذوری کا سرٹیفکیٹ دیا جانا چاہئے ۔ لیکن معذور نہ ہونے کے باوجود 2010 سے یہ دھاندلیاں جاری ہیں ۔ اس وقت کی حکومت نے جی او 31 جاری کیا تھا ۔ ابتداء میں کچھ سرگرمیاں دکھائی دی ۔ بعد ازاں خاموشی اختیار کر گئی ۔ ویجلنس کی تحقیقاتی رپورٹ کے مطابق 1200 سے زائد رعایت سے استفادہ کر رہے ہیں ۔ گذشتہ سال کچھ دن تنقیح کرنے پر 15 بوگس پائے گئے ۔ بعد ازاں محکمہ تعلیم کی جانب سے 418 ٹیچروں کے اسناد کو تحقیق کیلئے ورنگل ریجنل میڈیکل بورڈ کو بھیج دئے گئے تھے ۔ ان کی پوری سطح سے جانچ کی جاکر جتنا جلد ممکن ہوسکے رپورٹ بھیج دینے کی خواہش کی گئی ۔ اب تازہ صورتحال میں معذور ملازمین حقوق جدوجہد کمیٹی ضلع صدر منیندر ریڈی جنرل سکریٹری سرینواس نے ضلع کلکٹر نیتو کمار پرساد کو ایک یادداشت حوالے کی اور اسی طرح کی سبھی بدعنوانیوں کی جانچ کے اقدامات شروع کرتے ہوئے حقیقی مستحق کے ساتھ انصاف کرنے کا مطالبہ کیا ۔ اس پر کلکٹر نے سنجیدگی کے ساتھ تحقیق کرنے کیلئے سدرم کیمپ منظم کرنے کیلئے ڈی آر ڈی اے عہدیداروں کو حکم دیا ہے ۔ اس پر سدرم کے عہدیدار نے ناظم تعلیمات کو اطلاع دی اور ڈی ای او لنگیا نے ان تمام ٹیچرس کو جاریہ ماہ کی 16 کو اطلاع دے دی تھی ۔ 20 تاریخ سے ٹیچرس کیلئے خصوصی کیمپ منظم کئے گئے ہیں ۔ اب اس 40 فیصد سے زائد جسمانی معذوری ظاہر ہونے پر سرٹیفکیٹ دئے جائیں گے ۔

TOPPOPULARRECENT