بکتر بند گاڑیوں پر یوکرینی فوج کی فائرنگ

کیف۔ 16 اگست ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) یوکرین کا کہنا ہے کہ اس کی فوج نے سرحد پار کرکے آنے والی روسی بکتر بند گاڑیوں کے قافلے کو نشانہ بنایا ہے۔یوکرینی صدر پیٹرو پوروشینکو کے دفتر سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا کہ جمعرات کو رات گئے روس کی بکتر بند گاڑیوں نے یوکرینی حدودمیں داخل ہونے کی کوشش کی۔ پیٹروشینکو نے اس وقعے پر برطانو ی وزیر اعظم

کیف۔ 16 اگست ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) یوکرین کا کہنا ہے کہ اس کی فوج نے سرحد پار کرکے آنے والی روسی بکتر بند گاڑیوں کے قافلے کو نشانہ بنایا ہے۔یوکرینی صدر پیٹرو پوروشینکو کے دفتر سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا کہ جمعرات کو رات گئے روس کی بکتر بند گاڑیوں نے یوکرینی حدودمیں داخل ہونے کی کوشش کی۔ پیٹروشینکو نے اس وقعے پر برطانو ی وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون سے بھی بات چیت کی۔دوسری جانب روس کا کہنا ہے کہ اس کے فوجیوں نے یوکرین میں داخل ہونے کی کوشش نہیں کی، یوکرین نے من گھڑت کہانی بنائی ہے۔

روس نے کیف پر الزام لگایا کہ وہ مشرقی علاقوں میں پھنسے باغیوں تک امداد کی رسائی کو روکنے کی کوششیں کررہاہے۔ علاوہ ا زیں نیٹو نے بھی روس پر الزام لگایا ہے کہ روس یوکرین کے تنازع میں کشیدگی بڑھانے پہ تلا ہوا ہے۔نیٹو کی خاتون ترجمان، اونا لنگیسکو کا کہنا ہے کہ اگر اس بات کی تصدیق ہوجاتی ہے کہ روسی بکتر بند گاڑیاں یوکرینی حدود میں موجود تھے تو اِس کے شواہد مل جائیں گے کہ روس جو کہتا ہے، اس کے بالکل برعکس کرتاہے۔ ادھر روس کا کہنا ہے کہ اس کے پاس ایسی اطلاعات موجود ہیں کہ یوکرین میں روسی امدادی قافلے کو یوکرینی فورسز کی جانب سے نشانہ بنایا گیا ہے۔ماسکو کا کہنا ہے کہ معاہدے کے باوجود یوکرین لوگانسک تک امدادی قافلوں کی رسائی میں رکاوٹ ڈال رہا ہے۔

TOPPOPULARRECENT