بھارتیہ جنتا پارٹی کی قوم پرستی محض دکھاوا: غلام نبی آزاد

رافیل معاملت پر عوام کو گمراہ کرنے کا الزام، سی بی آئی اور محکمہ انکم ٹیکس اپنی وقعت کھوچکے ہیں، گاندھی بھون میں میڈیا سے بات چیت

حیدرآباد۔19ستمبر(سیاست نیوز) بھارتیہ جنتا پارٹی کی قوم پرستی محض دکھاوا ہے بی جے پی کو ملک کے مفادات اور سیکیورٹی سے کوئی دلچسپی نہیں ہے۔ جناب غلام نبی آزاد نے گاندھی بھون میں رافیل معاہدہ پر ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے یہ بات کہی۔ انہوںنے بتایاکہ 2007 میں ملک کو درپیش خطرات کے پیش نظر 126جنگی طیاروں کی خریدی کا فیصلہ کیا گیا تھا لیکن اب 2018میں طیاروں کی قیمتوں میں تو اضافہ ہوگیا لیکن تعداد کو گھٹا دیا گیا جس سے ان کی ملک سے محبت اور قوم پرستی واضح ہوجاتی ہے۔ مسٹر غلام نبی آزاد قائد اپوزیشن راجیہ سبھا نے گاندھی بھون میں ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ این ڈی اے حکومت ہندستان کو گمراہ کر رہی ہے اور یہ کہا جا رہاہے کہ حکومت نے رافیل معاملت میں یو پی اے سے کم قیمت میں معاہدہ کیا ہے جبکہ یو پی اے نے جو معاہدہ کیا تھا اس اعتبار سے جنگی طیارہ کی قیمت523متعین کی گئی تھی جبکہ این ڈی اے کی جانب سے کئے گئے نئے معاہدہ کے مطابق اسی طیارہ کیلئے 1670 کروڑ روپئے قیمت مقرر کی گئی جو کہ سابقہ قیمت سے 300 فیصد زائد ہے۔ انہو ںنے بتایا کہ رفائیل معاہدہ میں جو 2007میں یو پی اے حکومت نے کیا تھا اس بات کی وضاحت تھی کہ 36طیارے مکمل طور پر تیار ملک کو لائے جائیں گے جبکہ مابقی طیاروں کی تیاری HAL میں کی جائے گی اور اس دوران ہندستان کو بھی عصری جنگی طیارہ سازی میں مہارت حاصل کرنے کا موقع میسر آجاتا لیکن این ڈی اے نے جو معاہدہ کیا اس کے مطابق اب طیارہ سازی کا یہ عمل خانگی کمپنی حوالہ کیا جائے گا۔ جناب غلام نبی آزاد نے بتایا کہ کانگریس اور 16دیگر اپوزیشن جماعتیں رافیل معاملت میں عوامی عدالت سے رجوع ہوئے ہیں کیونکہ پارلیمنٹ میں متعدد مرتبہ اس مسئلہ کو اٹھانے کے باوجود حکومت کی جانب سے جواب نہیں دیا گیا اور ایسا محسوس ہورہا ہے کہ حکومت کی چمڑی اونٹ کی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ کانگریس زیر قیادت یو پی اے حکومت میں جب کبھی اپوزیشن نے کسی بھی معاملات میں تحقیقات کا مطالبہ کیا تو حکومت نے اس پر رضامندی ظاہر کی جس کی مثال 2G معاملت میں مشترکہ پارلیمانی کمیٹی کی تشکیل ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ ملک میں بی جے پی زیر قیادت این ڈی اے کی یہ شائد پہلی حکومت ہے جس میں کسی بھی معاملہ کی تحقیقات کے لئے مشترکہ پارلیمانی کمیٹی کی تشکیل عمل میں نہیں لائی گئی ۔ رفائیل معاملت میں حکومت کی جانب سے کی جانے والی کذب بیانی کے سلسلہ میں مسٹر آزاد نے کہا کہ مرکزی وزیر فینانس نے دعوی کیا ہے کہ این ڈی اے نے یو پی اے کی جو قیمت تھی اس سے 20 فیصد کم قیمت میں معاہدہ کیا ہے اس کے برعکس مرکزی وزیر قانون نے دعوی کیا کہ نئے معاہدہ سے ملک پر 9فیصد کم بوجھ عائد ہوگا۔ ( سلسلہ صفحہ 8 )

TOPPOPULARRECENT