Monday , December 18 2017
Home / شہر کی خبریں / بھوک ہڑتال کے پہلے دن کاپو لیڈر پدمنابھم گرفتار

بھوک ہڑتال کے پہلے دن کاپو لیڈر پدمنابھم گرفتار

ٹرین نذر آتش کرنے کے مقدمہ میں کارروائی ۔ حامیوں کو بھی حراست میں لے لیا گیا
وجئے واڑہ 9 جون ( پی ٹی آئی ) کاپو برادری کے لیڈر و سابق ریاستی وزیر مڈرا گڈا پدمنابھم نے آج اپنی قیامگاہ پر غیر معینہ مدت کی بھوک ہڑتال شروع کی تھی تاہم انہیں سی آئی ڈی کے عملہ نے جاریہ سال کے اوائل میں ٹونی میں ٹرین کو نذر آتش کئے جانے کے معاملہ میں گرفتار کرلیا ہے ۔ پدمنابھم نے مشرقی گوداوری ضلع میں اپنی قیامگاہ پر یہ بھوک ہڑتال شروع کی تھی ۔ ان کا مطالبہ ہے کہ 31 جنوری کو پیش آئے واقعہ کیسلسلہ میں جن پانچ نوجوانوں کو گرفتار کیا گیا ہے انہیں فوری رہا کیا جائے ۔ انہوں نے حکومت کو ان نوجوانوں کی رہائی کیلئے کل رات تک کی مہلت دی تھی جس کے بعد انہوں نے بھوک ہڑتال شروع کردی تھی ۔ کاپو برادری کی جانب سے احتجاج انہیں پسماندہ طبقات کے زمرہ میں شامل کرنے کیلئے کیا جا رہا ہے ۔ ٹونی میں یہ احتجاج اس وقت پر تشدد موڑ اختیار کرگیا تھا جب مظاہرین نے ایک مسافر بردار ٹرین کو نذر آتش کردیا تھا ۔ اس کے علاوہ کچھ خانگی و پولیس کی گاڑیوں کو نذر آتش کرنے کے علاوہ ایک پولیس اسٹیشن کو بھی نذر آتش کردیا گیا تھا ۔ آندرھا پردیش کے کرائم انوسٹیگیشن ڈپارٹمنٹ ( سی آئی ڈی ) کی جانب سے ٹرین نذر آتش کئے جانے کے کیس کی تحقیقات کی جا رہی ہیں۔ یہ افواہیں گشت کر رہی تھیںکہ پدمنابھم نے اپنی گرفتاری کو روکنے کچھ جراثیم کش ادویات استعمال کرلی ہیں جس کے بعد انہیں راممنڈری میں ایک دواخانہ میں شریک کرکے طبی معائنے کئے گئے ۔ تاہم ڈاکٹر نے توثیق کی کہ انہوں نے ایسی کوئی دوا استعمال نہیں کی ہے ۔ آج صبح سے ہی پدمنابھم کے گاوں میں ڈرامائی کیفیت دیکھی گئی جہاں کاپو لیڈر نے خود کو اپنے گھر میں مقفل کرلیا تھا اور دھمکی دی تھی کہ اگر پولیس نے انہیں زبردستی گرفتار کرنے کی کوشش کی تو وہ زہر پی لیں گے ۔ پدمنابھم کے حامیوںکی پولیس کے ساتھ تکرار بھی ہوئی اور ان کا مطالبہ تھا کہ اگرپولیس انہیں گرفتار کرنا چاہتی ہے تو ان کے خلاف الزامات بتائے جائیں۔ ایلورو رینج کے ڈی آئی جی پی راما کرشنا ‘ مشرقی گوداوری ضلع سپرنٹنڈنٹ پولیس روی پرکاش اور دوسرے سینئر پولیس عہدیدار سکیوریٹی اور صورتحال کا جائزہ لینے گاوں میں ہی کیمپ کئے ہوئے تھے ۔ بعد ازاں شام میں پولیس نے پدمنابھم کے درجنوں حامیوںکو حراست میں لے لیا اور انہیں گاڑیوں میں روانہ کرکے پدمنابھم کو گرفتار کرلیا ۔ پدمنابھم کو ٹرین نذر آتش کئے جانے کے معاملہ میں ملزم قرار دیا گیا ہے کیونکہ اس احتجاج کا انہوں نے ہی اعلان کیا تھا ۔ ان پر دفعہ 144 کے تحت امتناعی احکام کی خلاف ورزی کرنے پر بھی مقدمہ درج کیا گیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT