Monday , June 25 2018
Home / شہر کی خبریں / بھکاریوں کو ملی 12 ہزار کی نوکری

بھکاریوں کو ملی 12 ہزار کی نوکری

محکمہ بلدیہ کی تحریک رنگ لائی ، محکمہ جیل کی تربیت نے بدل دی زندگی
حیدرآباد ۔ 20 ۔ دسمبر : ( ایجنسیز ) : ایوانکا ٹرمپ کے حیدرآباد سے جانے کے بعد بھی فائدے ہورہے ہیں ، ایوانکا کے سفر کے دوران چوراہوں سے اٹھائے گئے بھکاریوں میں سے دو نوجوان بھکاریوں کو 12 ہزار روپئے ماہانہ تنخواہ پر انہیں نوکری ملی ہے ۔ گریٹر حیدرآباد مجلس بلدیہ ، محکمہ جیل اور ٹریفک پولیس کے ذریعہ شروع کردہ ’ بھکاریوں سے پاک حیدرآباد ‘ تحریک رنگ لانے لگا ہے ، حالانکہ پھر سے چوراہوں پر بھکاری دکھائی دینے لگے ہیں ۔ لیکن انتظامیہ نے ہار نہیں مانی ، اور چوراہوں سے اٹھائے گئے بھکاریوں کو روزگار سے وابستہ کرنے کا سلسلہ جاری رکھا ۔ بھکاریوں کے روپ میں پکڑے گئے ایل بی نگر کے ساکن سی ایچ اودے کمار اور چینائی کے ساکن پی راج کمار کو 12 ، 12 ہزار روپئے ماہانہ تنخواہ پر محکمہ جیل کے ذریعہ قائم مائی نیشنل آیوروید موضع میں مقرر کیا گیا ہے ۔ محکمہ جیل چنچل گوڑہ کے پٹرول پمپ کے نزدیک قائم تربیتی کیمپ میں جسمانی روپ سے صحت مند بھکاریوں کو ان کی قابلیت کے اعتبار سے انہیں بہتر سے بہتر تربیت فراہم کیا جارہا ہے ۔ قابل ذکر بات ہے کہ گلوبل سمٹ کے دوران اور اس کے بعد سڑکوں ، چوراہوں اور مذہبی مقام کے پاس جن بھکاریوں کو پکڑا گیا ، مجلس بلدیہ نے ان کی بائیو میٹرک جانکاری حاصل کی ، ان کی قابلیت کے اعتبار سے انہیں تربیت فراہمی کی ذمہ داری محکمہ جیل نبھا رہا ہے ۔ جن بھکاریوں کو تربیت فراہم کیا جاتا ہے ان کے نوکریوں کے لیے مواقع تلاش کیے جارہے ہیں ۔ دوسری طرف اگر وہ پھر سے سڑکوں پر بھیک مانگتے ہوئے پائے جاتے ہیں تو ان کے خلاف بائیو میٹرک جانکاری کی بنیاد پر کاروائی کی جاسکتی ہے ۔ ان کے خلاف کریمنل مقدمات بھی درج کئے جاسکتے ہیں ۔ جس سے انہیں جیل کی ہوا کھانی پڑ سکتی ہے ۔ تحریک کی شروعات میں ٹریفک پولیس اور جی ایچ ایم سی کی مشترکہ ٹیموں نے گذشتہ 11 جولائی کو 22 بچوں کو بھیک مانگتے ہوئے پکڑا اور انہیں ’ اما ناترا آنند آشرم ‘ چوٹ اپل بھیجا ۔ بعد میں بھکاریوں کو تربیت فراہم کرنے کے کام میں محکمہ جیل بھی شامل ہوگیا ۔ بیس دن تک تحریک چلا کر بھکاریوں کی پہچان کی گئی ، دوسرے مرحلہ میں 4 سے 14 ستمبر تک 59 لوگوں کو آشرم بھیجا گیا ۔ 40 بھکاریوں کو ان کے خاندان سے جوڑا گیا اور 19 بھکاریوں کو اب بھی آشرم میں رکھا گیا ہے ۔ جی ایچ ایم سی نے گذشتہ 20 اکٹوبر سے 15 نومبر تک 222 بھکاریوں کو پکڑا ۔ ان میں 84 خواتین اور 138 مرد شامل تھے ۔ انہیں چنچل گوڑہ جیل کے ذریعہ قائم تربیتی مقام پر رکھا گیا ۔ گذشتہ 7 سے 17 دسمبر تک چلائے گئے تحریک کے دوران جن 134 بھکاریوں کو پکڑا گیا ان میں 90 مرد تھے ۔ جنہیں چرلا پلی تربیتی مرکز بھیجا گیا ۔ جب کہ خواتین اور بچوں کو چنچل گوڑہ تربیتی مرکز میں رکھا گیا ۔ انہیں روزگار سے وابستہ کرنے کے لیے تربیت دی جارہی ہے ۔ آشرم میں رہنے کے دوران ان کی بائیو میٹرک جانکاری حاصل کی جارہی ہے تاکہ دوبارہ بھیک مانگتے ہوئے پکڑے جانے پر ان کی فوری پہچان ہوسکے اور ان کے خلاف کارروائی کی جاسکے ۔ بھکاریوں کو مکمل تربیت دینے کے بعد ان کی روزگار سے وابستگی سے خوش جی ایچ ایم سی کے عہدیدار بھکاریوں کی تربیت کے لیے انہیں روزگار پر مبنی کاموں سے جوڑنے پر غور و فکر کررہے ہیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT