Sunday , November 19 2017
Home / ہندوستان / بھگدڑ کے بعد وارناسی میں صورتحال معمول پر

بھگدڑ کے بعد وارناسی میں صورتحال معمول پر

نئی دہلی، 16 اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام) صدر جمہوریہ پرنب مکھرجی نے بنارس کے رام نگر علاقے میں ڈومري کٹیسر میں گزشتہ روز دو روزہ احتمات کے دوران نکالی گئی شوبھا یاترا میں بھگدڑ مچنے سے 25 افراد کی موت ہونے پر شدید رنج و غم کا اظہار کیا ہے ۔  صدر جمہوریہ نے اتر پردیش کے گورنر رام نائک کو خط لکھ کر بھگدڑ میں لوگوں کی اموات پر افسوس ظاہر کیا ہے ۔ اپنے پیغام میں صدر پرنب مکھرجی نے کہا کہ”اتر پردیش کے بنارس میں ہونے والی بھگدڑ سے میں رنجیدہ ہوں، جس میں کئی لوگوں کی موت ہو گئی اور متعدد دیگر زخمی ہو گئے ہیں”۔  انہوں نے کہا کہ”میں نے ریاستی حکومت اور دیگر حکام کو فون کر کے غمزدہ خاندانوں کو ہر ممکن مدد کرنے کے لئے کہا ہے ۔
مرنے والوں کے اہل خانہ کے تئیں میری گہری تعزیت ہے ۔ میں زخمیوں کے جلد صحت مند ہونے کے لئے دعا گو ہوں”۔ اترپردیش میں بنارس کے رام نگر علاقے میں کل راج گھاٹ پر بھگدڑ میں 25 افراد کی موت اور 50 سے زیادہ لوگوں کے زخمی ہونے کی کرب ناک سانحہ کے بعد آج یہاں صورت حال معمول پر لوٹ آئی ہے ۔  بنارس کے رام نگر میں واقع ڈومري کٹیسر میں “جے گرو دیو” کا پروگرام آج مقررہ وقت پرصبح دس بجے شروع ہوا ۔ پروگرام کے پنڈال کے ارد گرد بڑی تعداد میں پولس فورس تعینات ہے ۔ دریں اثنا، مرکزی لباس وزیر میموری ایرانی آج ھستشلپیو کے لئے منعقد دستکار چوپال میں شامل ہونے آ رہی ہے جو زخمیوں کا حال چال جاننے بیے چیو کے ٹراما سینٹر یا دیگر ہسپتالوں میں جا سکتی ہیں۔جے ڈی (یو) کے سابق صدر و سینئر قائد شرد یادو نے حکومت پر زور دیا کہ وہ آئندہ بھگدڑ جیسے سانحہ سے بچنے کیلئے رہنمایانہ ہدایات جاری کرے ۔ دریں اثناء وارناسی سے موصولہ اطلاع کے بموجب مرکزی بنڈارو دتاتریہ نے اس سانحہ پر رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ریاستی حکومت وارناسی بھگدڑ کے سانحہ کی ذمہ دار ہے ۔کیونکہ اس نے ریاست میں پیش آنے والے سابق واقعات سے کوئی سبق نہیںلیا۔

TOPPOPULARRECENT