Sunday , November 19 2017
Home / شہر کی خبریں / بہار اسمبلی انتخابات میں مجلس کو صرف 0.2 فیصد ووٹ

بہار اسمبلی انتخابات میں مجلس کو صرف 0.2 فیصد ووٹ

’’میں دلت لیڈر کانشی رام کے نظریہ کو مانتا ہوں‘‘ ، شکست پر اسد اویسی کا تبصرہ

حیدرآباد 8 نومبر (سیاست نیوز) بہار اسمبلی انتخابات میں مجلس اتحاد المسلمین کو صرف 0.2 فیصد حاصل ہوئے ہیں۔ مجلس نے بہار اسمبلی انتخابات میں سیمانچل سے 6 امیدوار میدان میں اُتارے تھے اور صدر مجلس نے تقریباً ایک ماہ قیام کے دوران زائداز 65 جلسہ عام سے خطاب کیا تھا۔ آج صبح جب نتائج کا اعلان شروع ہوا اُس وقت مجلس کے دو امیدواروں کو کچھ برتری حاصل تھی لیکن جیسے جیسے نتائج منظر عام پر آتے گئے مجلس کے تمام امیدوار مقابلہ سے دور ہوگئے۔ کوچہ دمن حلقہ اسمبلی سے مجلس کے مقامی صدر اخترالایمان امیدوار تھے جنھیں 37086 ووٹ حاصل ہوئے اور اِس حلقہ اسمبلی سے ماسٹر مجاہد عالم امیدوار جنتادل (یو) نے 55,929 ووٹ حاصل کرتے ہوئے کامیابی حاصل کی۔ کشن گنج حلقہ اسمبلی سے مجلسی امیدوار تاثیرالدین تیسرے نمبر پر رہے اور اُنھیں 16,440 ووٹ حاصل ہوئے جہاں کانگریس کے امیدوار ڈاکٹر محمد جاوید نے 66,522 ووٹ لیتے ہوئے کامیابی حاصل کی جبکہ دوسرے نمبر پر بی جے پی کی امیدوار سویٹی سنگھ رہی جنھوں نے 57,913 ووٹ حاصل کئے۔ حلقہ اسمبلی بائسی میں مجلسی امیدوار غلام سرور کو چوتھا مقام حاصل ہوا جہاں عبدالسبحان امیدوار راشٹریہ جنتادل نے 67022 ووٹ حاصل کرتے ہوئے کامیابی حاصل کی۔ دوسرے نمبر پر 28,282 ووٹ کے ساتھ بنود کمار نامی آزاد امیدوار رہے۔ جن ادھیکاری پارٹی کے امیدوار سید رکن الدین احمد نے 21,404 ووٹ حاصل کرتے ہوئے تیسرا مقام حاصل کیا جبکہ مجلسی امیدوار کو 16,723 ووٹ حاصل ہوئے۔ حلقہ اسمبلی امور سے عبدالجلیل مستان کانگریس امیدوار نے 1,00135 حاصل کرتے ہوئے کامیابی حاصل کی جبکہ دوسرے نمبر پر بی جے پی کی امیدوار صباء ظفر رہیں جنھوں نے 48,138 ووٹ حاصل کئے۔ اسی طرح تیسری نمبر پر شیوسینا امیدوار انیما داس نے 4393 ووٹ حاصل کئے جبکہ بہوجن سماج پارٹی کے امیدوار نے جو چوتھے نمبر پر تھے، 2458 ووٹ حاصل کئے۔ مجلسی امیدوار کو امور اسمبلی حلقہ میں پانچواں مقام حاصل ہوا جنھیں 1955 ووٹ حاصل ہوئے۔ رانی گنج حلقہ اسمبلی میں مجلسی امیدوار ڈاکٹر امیت کمار کو چھٹا مقام حاصل ہوا جہاں اُنھیں صرف 1669 ووٹ ملے۔ اس حلقہ سے جے ڈی (یو) امیدوار نے 77,717 ووٹ حاصل کرتے ہوئے کامیابی حاصل کی۔ دوسرے نمبر پر بی جے پی کے امیدوار رہے جنھوں نے 62,787 ووٹ حاصل کئے۔ بلرام پور حلقہ اسمبلی میں بھی مجلسی امیدوار کو چھٹا مقام حاصل ہوا جہاں کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا مارکسسٹ لیننسٹ کے امیدوار محبوب عالم نے 62,513 ووٹ حاصل کرتے ہوئے بی جے پی کے امیدوار برون کمار جھا کو شکست دی۔ اس حلقہ اسمبلی میں مجلس کو 6375 ووٹ حاصل ہوئے۔ 6 اسمبلی حلقوں میں مجلس اتحاد المسلمین کے امیدواروں نے جملہ 80,248 ووٹ حاصل کئے ہیں جوکہ رائے دہی کا صرف 0.2 فیصد ہوتا ہے۔ بہار اسمبلی انتخابات میں NOTA کو 9,31,099 ووٹ حاصل ہوئے جوکہ مستعملہ ووٹ کا ڈھائی فیصد ہوتا ہے۔ صدر مجلس اسدالدین اویسی نے بہار میں اپنے امیدواروں کی شکست کے بعد منعقدہ پریس کانفرنس میں کہاکہ وہ بہوجن سماج پارٹی کے بانی کانشی رام کے نظریہ کو مانتے ہیں اور بارہا یہ استدلال کررہے ہیں کہ پہلے انتخابات ہارنے کیلئے ہوتے ہیں، جبکہ دوسرے انتخابات ہرانے کیلئے لڑے جاتے ہیں۔ تیسرے انتخابات میں کامیابی کے لئے حصہ لیا جاتا ہے۔ اُنھوں نے عظیم اتحاد کی کامیابی پر نتیش کمار کو مبارکباد پیش کی۔

TOPPOPULARRECENT