Saturday , November 18 2017
Home / Top Stories / بہار انتخابات سے قبل امیت شاہ اور اسد اویسی نے معاملت کی تھی

بہار انتخابات سے قبل امیت شاہ اور اسد اویسی نے معاملت کی تھی

شاہ ۔ اویسی ملاقات 15  ستمبر 2015 کو علی الصبح 3 بجے ہوئی تھی ۔ووٹوں کی تقسیم دونوں کا مقصد۔ سابق بی جے پی رکن اسمبلی یاتین اوزاکا دعوی

احمد آباد 11 جولائی ( پی ٹی آئی ) بی جے پی کے سابق رکن اسمبلی یاتین اوزا نے ‘ جو عام آدمی پارٹی میں شامل ہوگئے ہیں ‘ آج دعوی کیا کہ بی جے پی کے صدر امیت شاہ اور مجلس اتحاد المسلمین کے صدر اسد الدین اویسی نے بہار اسمبلی انتخابات سے قبل مسلم اکثریتی علاقوں میں ووٹوں کی تقسیم کیلئے معاملت کرلی تھی ۔ اوزا کے دعوی پر رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے عام آدمی پارٹی لیڈر و چیف منسٹر دہلی اروند کجریوال نے اپنے ٹوئیٹر پر کہا کہ اگر یہ صحیح ہے تو اس سے بی جے پی ۔ مودی ۔ امیت شاہ کا حقیقی چہرہ آشکار ہوجاتا ہے۔ کجریوال کو 4 جولائی کو ایک مکتوب روانہ کرتے ہوئے اوزا نے ادعا کیا کہ امیت شاہ اور اسد اویسی کے مابین ہوئی ملاقات میں وہ خود ( اوزا ) بھی موجود تھے ۔ انہوں نے دعوی کیا کہ یہ ملاقات 15 ستمبر 2015 کو صبح کی اولین ساعتوں ( تین بجے علی الصبح )  ہوئی تھی ۔ انہوں نے دعوی کیا کہ اس ملاقات میں یہ فیصلہ ہوا تھا کہ اویسی بہار میں انتخابی مہم کے دوران زہر آلود تقاریر کریں گے اور یہ تقاریر امیت شاہ کی تحریر کردہ ہونگی ۔ اوزا نے مزید الزام عائد کیا کہ اسد اویسی نے حیدرآباد میں آئی ایس آئی ایس سے مشتبہ روابط کے الزام میں گرفتار کئے گئے نوجوانوں کو قانونی مدد فراہم کرنے کا جو اعلان کیا ہے وہ بھی اسی سازش کا حصہ ہوسکتا ہے ۔ میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے اوزا نے ‘ جو گجرات ہائیکورٹ کے ایک وکیل بھی ہیں ‘ کہا کہ امیت شاہ اور اسد اویسی کی ملاقات میں وہ بھی موجود تھے ۔ اس ملاقات میں تفصیلی بات چیت ہوئی اور اس بات سے اتفاق کیا کہ اویسی بہار میں اپنے امیدوار نامزد کرینگے خاص طور پر مسلم بیلٹ میں اپنے امیدوار نامزد کریں گے جہاں آخری مرحلہ میں 5 نومبر کو پولنگ ہونے والی تھی ۔ انہوں نے کہا کہ ملاقات میں فیصلہ ہوا کہ اویسی زہر آلود فرقہ وارانہ تقاریر کرینگے ۔ ان تقاریر کی تیاری امیت شاہ کرینگے ۔اجلاس میں فیصلہ ہوا تھا کہ اویسی اور بی جے پی عوام میں ایک دوسرے کے کٹر حریف اور مخالف کی طرح ہونگے لیکن اویسی صرف انہی خطوط پر تقاریر کرینگے جو امیت شاہ چاہیں گے تاکہ نفرت کا ماحول پیدا ہو اور کشیدگی پیدا ہو۔ بی جے پی نے اوزا کے بیان کی تردید کی اور کہا کہ یہ در اصل میڈیا کی توجہ حاصل کرنے کی کوشش ہے ۔ گجرات بی جے پی میڈیا کنوینر ہرشد پٹیل نے کہا کہ اوزا کا دعوی بے بنیاد ہے اور یہ کجریوال کی طرح میڈیا کی توجہ حاصل کرنے کی کوشش ہے اور خود اویسی بھی الزام کی تردید کرچکے ہیں۔ بہار اسمبلی انتخابات میں آر جے ڈی ۔ بی جے ڈی ۔ کانگریس اتحاد نے شاندار کامیابی حاصل کی تھی ۔ مجلس نے یہاں سیمانچل علاقہ میں چار اضلاع اراریہ ‘ پورنیا ‘ کشن گنج اور کٹیہار میں مقابلہ کیا تھا لیکن اسے ایک بھی نشست پر کامیابی نہیں ملی تھی ۔ اوزا نے یہ بھی دعوی کیا کہ گجرات بی جے پی کے نو منتخب صدر وجئے روپانی بھی اویسی کے پرانے دوست ہیں۔ انہوں نے ادعا کیا کہ انہوں نے روپانی کے ساتھ اسد اویسی کے ساتھ 11 مارچ کو دہلی ائرپورٹ پر انتہائی گرمجوشانہ ملاقات کی تھی ۔ انہوں نے کہا کہ ائرپورٹ کے احاطہ میں دونوں نے ایک دوسرے کی سمت دیکھا تک نہیں اور وی آئی پی لاؤنج کی سمت بڑھ گئے ۔ وہ بھی وہاں گئے تھے ۔ انہیں اس وقت حیرت ہوئی جب دونوں نے ایک دوسرے سے مصافحہ کیا ان کی بات چیت سے انجان آدمی بھی یہ سمجھ سکتا تھا کہ یہ دونوں پرانے دوست ہیں۔ اوزا کے مکتوب کی نقل کو ویب سائیٹ جنتا کا رپورٹر پر پیش کیا گیا ۔
قانونی کارروائی کی جائے گی : اسدالدین اویسی
اس دوران صدر مجلس اسد اویسی نے مکتوب پر شدید رد عمل ظاہر کیا ہے اور ٹوئیٹر پر کہا کہ وہ عآپ کی ترجمان ویب سائیٹ جنتا کا رپورٹر کے خلاف قانونی چارہ جوئی کریں گے ۔ انہوں نے وکیل کے ذریعہ نوٹس بھیجنے کا ارادہ بھی ظاہر کیا ہے ۔ واضح رہے کہ جو مکتوب اوزا نے تحریر کیا اس میں اکبر الدین اویسی کا نام ہے جبکہ ایجنسیز و اخبارات نے اسد الدین اویسی شائع کیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT