Monday , November 20 2017
Home / شہر کی خبریں / بہار بی جے پی لیڈر کا قاتل حیدرآباد میں گرفتار

بہار بی جے پی لیڈر کا قاتل حیدرآباد میں گرفتار

تیز نشانہ باز نے سپاری لی تھی، سی سی ٹی وی کیمروں کے ذریعہ شناخت
حیدرآباد۔ /19 اگست (سیاست نیوز) بہار کی پٹنہ پولیس نے آج ایک خفیہ آپریشن میں خطرناک پیشہ ور قاتل (شارپ شوٹر) کو جوبلی ہلز علاقہ سے گرفتار کرلیا جو بہار کے نوجوان بی جے پی لیڈر اویناش کمار کے قتل میں ملوث ہے ۔ 32 سالہ محمد راجہ متوطن پٹنہ نے اپنے دو ساتھیوں انجم اور علاء الدین کی مدد سے /6 اگست کو مقامی بی جے پی لیڈر اویناش کمار کو سیاسی مخاصمت کے نتیجہ میں اسے گولی مارکر ہلاک کردیا تھا ۔ یہ واقعہ بہار کے سلیم پور اہراہ علاقہ میں اس وقت پیش آیا تھا جب بی جے پی لیڈر چائے کی دوکان کو پیدل جارہا تھا ۔ پٹنہ پولیس نے اسی علاقہ میں واقع ایک مندر کے سی سی ٹی وی کیمرے کی ویڈیو ریکارڈنگ کی مدد سے راجہ اور اس کے دو ساتھیوں کی شناخت کرلی تھی لیکن خاطی قتل کے فوری بعد ممبئی فرار ہوگئے تھے ۔ گرفتاری سے متعلق تفصیلات کیلئے ربط پیدا کئے جانے پر پٹنہ سٹی کے سینئر سپرنٹنڈنٹ آف پولیس مسٹر وکاس ویبھو نے سیاست نیوز کو بتایا کہ اویناش کمار کا سیاسی قتل ہے اور اس کے قتل کیلئے بی جے پی لیڈر کے حریف گروپ سابق کارپوریٹر پنا لال گپتا اور اس کے بیٹے نے محمد راجہ اور اس کے گیانگ کی مدد حاصل کرتے ہوئے انہیں قتل کیلئے سپاری (رقم)  دی تھی اور بی جے پی لیڈر کا تعاقب کرتے ہوئے راجہ کی گیانگ نے اس کا قتل کردیا تھا۔ قتل کے دوران راجہ نے اویناش کے سر میں گولی ماری تھی۔ انہوں نے بتایا کہ اس قتل کے بعد بہار میں سیاسی ماحول گرمایا گیا تھا اور گرفتاری کیلئے خصوصی پولیس ٹیمیں تشکیل دی گئی تھی اور پولیس کی مسلسل کارروائی سے پریشان انجم اور علاء الدین نے پٹنہ کے مقامی سب جج کے اجلاس پر خودسپردگی اختیار کی تھی جبکہ محمد راجہ ممبئی سے حیدرآباد پہونچ کر جوبلی ہلز علاقہ میں پناہ لی تھی ۔ پٹنہ پولیس نے آج کارروائی کرتے ہوئے راجہ کو اس کے رشتہ دار کے مکان سے گرفتار کرلیا جہاں پر اس نے خفیہ طور پر پناہ لئے ہوئے تھا اور اس کے قبضے سے قتل میں استعمال کی گئی پستول بھی برآمد کرلی ۔ پٹنہ پولیس کی خصوصی ٹیم نے راجہ کی گرفتاری کی اطلاع جوبلی ہلز پولیس کو دی اور بعد ازاں مقامی عدالت سے ٹرانزٹ وارنٹ پر اسے پٹنہ منتقل کیا گیا ۔

TOPPOPULARRECENT