Monday , December 11 2017
Home / Top Stories / بہار میںصدر راج کے نفاذ کا وقت آگیا : پاسوان

بہار میںصدر راج کے نفاذ کا وقت آگیا : پاسوان

پٹنہ۔15مئی ( سیاست ڈاٹ کام ) ایک کمسن اور ایک صحافی کے اندرون ایک ہفتہ قتل سے ثابت ہوگیا ہے کہ بہار میں صدر راج کے نفاذ کا وقت آگیا ہے کیونکہ نظم و قانون کی صورتحال ابتر ہوچکی ہے ۔ بہار میں نظم و ضبط بری طرح ناکام ہوگیا ہے ‘ چنانچہ صدر راج نافذ کیا جانا چاہیئے ۔ لوگ جن شکتی پارٹی کے سربراہ رام ولاس پاسوان نے آج کہا کہ یہی مناسب وقت ہے کہ بہار میں صدر راج نافذ کردیا جائے ۔کمسن آدتیہ سچدیوا کا گیا میں اور ایک صحافی راجدیو رنجن کا سیوان میں قتل وہ بھی اندرون ایک ہفتہ ثابت کرتا ہے کہ ریاست میں نظم و ضبط مکمل طور پر ناکام ہوچکا ہے ۔ مبینہ طور پر سچدیوا کو جے ڈی ( یو) کی ایم ایل سی منوراما دیوی کے فرزند 7مئی کو گیا میں سڑک پر زبانی تکرار کے بعد گولی مار کر ہلاک کردیا تھا جب کہ صحافی رنجن کو 13مئی کو چھاترا میں گولی مار کر ہلاک کردیا گیا ۔ پاسوان نے کہا کہ ایسا معلوم ہوتا ہے کہ صورتحال جنگل راج سے بھی بدتر ہوگئی ہے اور راکھشس راج چل رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ صدر راج صورتحال کو مزید ابتر ہونے سے روک سکتا ہے ۔ مرکزی وزیر برائے اغذیہ ‘ عوامی نظام تقسیم و اُمور صارفین نے مطالبہ کیا کہ دونوں واقعات کی سی بی آئی تحقیقات کروائی جائے اور کہا کہ بہار کی پولیس خاطیوں کو سیاسی دباؤ کی وجہ سے انصاف کے کٹھہرے میں کھڑا کرنے سے قاصر رہے گی ۔ انہوں نے ذرائع ابلاغ اور بحیثیت مجموعی عوام سے خواہش کی کہ ریاستی حکومت پر سی بی آئی تحقیقات کیلئے دباؤ ڈالیں ۔ رام ولاس پاسوان نے کہا کہ عوامی دباؤ مرکز کو مجبور کردے گا کہ صدر راج کے بہار میں نفاذ پر غور کرے کیونکہ نظم و ضبط مکمل طور پر ناکام ہوچکا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ شراب بندی کیلئے دیگر ریاستوںکا دورہ کرنے کے بجائے چیف منسٹر نتیش کمار کو چاہیئے کہ خود اپنی ریاست میں نظم و ضبط کی صورتحال کو بہتر بنانے کی کوشش کریں ۔

TOPPOPULARRECENT