Tuesday , November 21 2017
Home / سیاسیات / بہار کے انتخابات میں عوام کا منقسمہ فیصلہ ہوگا

بہار کے انتخابات میں عوام کا منقسمہ فیصلہ ہوگا

تشکیل حکومت میں تیسرے محاذ کا کلیدی رول ، پپو یادو کا ادعا
گھوشواری ۔ بیجنا ( موکاما ) ۔ 20 ۔ اکٹوبر : ( سیاست ڈاٹ کام ) : مادھے پور کے متنازعہ رکن پارلیمنٹ مسٹر پپو یادو نے آج یہ ادعا کیا ہے کہ بہار میں تیسرے محاذ کی تائید کے بغیر کوئی بھی حکومت تشکیل نہیں دے سکتی اور بتایا کہ اسمبلی انتخابات میں دیگر 2 محاذوں (فرنٹس ) کو واضح اکثریت حاصل نہیں ہوگی گذشتہ 15 سال کے دوران سیاسی وفاداریاں تبدیل کرنے میں ماہر راجیش رنجن عرف پپو یادو نے اسمبلی انتخابات سے عین قبل آر جے ڈی سربراہ لالو پرساد یادو سے ترک تعلق کرلیا تھا اور ایک علحدہ سیاسی جماعت راشٹریہ جن ادھیکاری پارٹی قائم کرتے ہوئے تیسرے محاذ کے ایک حلیف کی حیثیت سے انتخابات میں مقابلہ کررہے ہیں ۔ ان کا یہ ایقان ہے کہ نہ این ڈی اے اور نہ ہی عظیم اتحاد واضح اکثریت حاصل کرے گی اور غیر یقینی سیاسی حالات میں وہ کلیدی رول ادا کرنے کے لیے تیار ہیں ۔ مسٹر پپو یادو نے یہ ادعا کیا کہ صرف وہی غریبوں اور نوجوانوں کے چہروں پر مسکراہٹ لاسکتے ہیں اور ممکن ہے کہ آئندہ حکومت کی تشکیل میں کوئی بھی محاذ ان کی تائید کے لیے مجبور ہوسکتا ۔ انہوں نے بتایا کہ عظیم اتحاد اور بی جے پی سے تمام ذات برادری کے لوگ مایوس ہیں ۔ چونکہ دونوں محاذوں میں کوئی ایک بھی واضح اکثریت حاصل نہیں کرسکتا اور تیسرے محاذ کی تائید بغیر حکومت کی تشکیل کے اہل نہیں ہوں گے ۔۔

TOPPOPULARRECENT