Thursday , November 23 2017
Home / اضلاع کی خبریں / بیت الخلاؤں کے تعمیری فنڈز میں کروڑہا روپئے کی بدعنوانی

بیت الخلاؤں کے تعمیری فنڈز میں کروڑہا روپئے کی بدعنوانی

کریم نگر۔ 9 فروری (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ریاستی وزیر آئی ٹی و پنچایت راج کے ٹی آر کے حلقہ میں انفرادی بیت الخلاؤں کی تعمیر میں فنڈز پروگراموں میں کروڑہا روپئے کی بدعنوانی پیش آئی ہے۔ اس گھپلے بازی کے ثبوت موجود ہیں۔ صدر ضلع کانگریس کمیٹی کٹکم مرتنجیم نے یہ الزام عائد کیا۔ انہوں نے یہاں اپنی رہائش گاہ پر منعقدہ پریس کانفرنس میں میڈیا نمائندوں سے خطاب کرتے ہوئے ان خیالات کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ پیش آئی بدعنوانی سے متعلق واقعات کی ملک کی ویجیلنس کے ذریعہ تحقیقات کی مانگ کی۔ انہوں نے کہا کہ ریاستی وزیر کے گود لئے گاؤں میں 6 لاکھ روپئے فنڈز کی اجرائی عمل میں لائی گئی، اس فنڈز کو متعلقہ عہدیدار اور سرپنچ نے مل بیٹھ کر من مانی بلس بناتے ہوئے آپس میں فنڈز حاصل کرلئے۔ انہوں نے کہا کہ ضلع میں خشک سالی کی بدترین صورتِ حال ہے۔ تقریباً 9 میونسپل حدود میں زیرزمین پانی کی سطح کافی نیچے جاچکی ہے۔ پینے کے پانی کی کافی قلت ہے۔ پانی کی قلت پیش آنے سے قبل کوئی متبادل انتظامات نہیں کئے گئے۔ روزمرہ کی ضروریات اور پینے کے پانی کی سربراہی کو یقینی بنائے جانے کے لئے فنڈز کی ضرورت ہے۔ اس کے لئے دیگر شعبہ جات کے فنڈز کو منتقل کئے جانے کی ضرورت ہے۔ اس سلسلے میں غیرضروری رکاوٹوں کو دور کیا جانا چاہئے۔ مویشی چارہ کی قلت سے دوچار ہیں۔ جن کیلئے دیگر ریاستوں سے چارہ منگوایا جانا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ چنا ملسکانور میں ڈبل بیڈ روم مکانات کا تیقن دیا گیا، تاہم عوام میں مایوس ہیں۔ انہوں نے یہاں فوری مکانات کی تعمیر کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے جی ایچ ایم سی انتخابات میں استعمال کئے گئے اے وی ایم کی کارکردگی پر تحقیقات کا مطالبہ کیا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT