Wednesday , December 19 2018

بیت المقدس کو سفارتخانہ منتقل کرنے امریکی فیصلہ مسترد

عرب سربراہ کانفرنس سے شاہ سلمان کا خطاب، فلسطین کے کاز کیلئے کام کرنے کا عہد
الخبر۔15اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی سربراہی میں آج اتوار کو ضہران میں 29ویں عرب سربراہ کانفرنس شروع ہوگی۔ کانفرنس میں شرکت کیلئے عرب ممالک کے سربراہان ضہران پہنچ چکے ہیں۔سربراہ کانفرنس کا بنیادی ایجنڈامسئلہ فلسطین اور بیت المقدس کی عربی اور اسلامی شناخت کی برقراری ہے۔ قبل ازیں ریاض میں عرب وزرائے خارجہ کا اجلاس منعقد ہوا جس میں وزرائے خارجہ نے فلسطینی سرزمین پر آزاد ریاست کے قیام پر زور دیا اور 1976ء کی حدود کی بحالی اور بیت المقدس کو فلسطینی ریاست کا دارالحکومت بنانے کے اصولی مطالبہ کا اعادہ کیا۔ عرب اسرائیلی تنازعہ کے حل کیلئے عرب ممالک کی تجویز کا احیاء کرتے ہوئے تل ابیب سے بیت المقدس سفارتخانہ منتقل کرنے کے امریکی فیصلہکو مستردکرتے ہوئے کہا کہ یہ فیصلہ اقوام متحدہ اور سلامتی کونسل کی قراردادوں کی صریح خلاف ورزی ہے۔ عرب وزرائے خارجہ نے زور دیاکہ مشرقی بیت المقدس، فلسطینی ریاست کا تاریخی دارالحکومت ہے۔ اس پر کسی قسم کی لچک کا مظاہرہ نہیں کیا جاسکتا۔ فلسطینی ریاست کے مالی بحران کا مقابلہ کرنے کیلئے 100ملین ڈالر کے فنڈ کی تجویز دی۔ دوسری جانب و زارت ثقافت و اطلاعات نے عرب سربراہ کانفرنس کی میڈیا کوریج کیلئے میڈیا سینٹر قائم کیا ہے۔ چوٹی کانفرنس میں شام کے سوائے دیگر تمام عرب ممالک نے شرکت کی ۔ شام کی جنگ اور ایران چوٹی کانفرنس کے اہم موضوعات رہے ۔ سعودی عرب سنی طبقہ کی جب کہ ایران شیعہ باغیوں کی تائید میں سرگرم ہیں ۔ سعودی عرب کے حکمراں ملک سلمان نے کہا کہ اسرائیل کے ساتھ ہمارے کئی مفادات مشترک ہیں اور خلیجی تعاون کونسل کے رکن 11ممالک علاقائی مفادات کی بنیاد پر یہودی مملکت سے تعاون کرنے پر مجبور ہوں گے ۔

TOPPOPULARRECENT