Saturday , December 16 2017
Home / شہر کی خبریں / بیروزگاری میں شدید اضافہ ، کئی کمپنیوں میں ملازمین کی تخفیف

بیروزگاری میں شدید اضافہ ، کئی کمپنیوں میں ملازمین کی تخفیف

آئی ٹی صنعت میں معاشی انحطاط کی وجہ سے سنگین صورتحال ، کئی نوجوانوں کی ملازمتوں سے بیدخلی
حیدرآباد۔10اکٹوبر (سیاست نیوز) ملک میں بے روزگاری کی شرح میں گراوٹ کے بجائے اضافہ ہونے لگا ہے اور مختلف شعبوں میں خدمات انجام دے رہے ملازمین کو خدمات سے معطل کرنے کیلئے منصوبہ بندی کی جانے لگی ہے۔ ملک کی معاشی صورتحال میں آنے والی خرابی کو محسوس کرتے ہوئے مختلف کمپنیوں کے ذمہ داروں نے ملازمین کی تعداد میں تخفیف کا فیصلہ کیا ہے اور انفارمیشن ٹکنالوجی شعبہ کے علاوہ مواصلات کے شعبہ میں بھی صورتحال بتدریج ابتر ہوتی جا رہی ہے۔ آئی ٹی صنعت میں معاشی انحطاط سے نمٹنے کیلئے چھوٹے درجہ کے زائد ملازمین کو خدمات سے ہٹایا جاتا رہا ہے لیکن اب جو صورتحال پیدا ہورہی ہے اسے دیکھتے ہوئے یہ کہا جا سکتا ہے کہ آئی ٹی صنعت کی صورتحال انتہائی ابتر ہو چکی ہے اور اس صورتحال سے نمٹنے کیلئے کمپنیوں کی جانب سے اب بڑے عہدوں پر فائز ملازمین کو بھی ہٹایا جانے لگا ہے لیکن ان کی خدمات سے علحدگی کو رضاکارانہ قرار دیا جا رہا ہے تاکہ کمپنی کا نام خراب نہ ہونے پائے۔ ہندستانی آئی ٹی شعبہ میں معاشی انحطاط کا اثر اور زیادہ ہوتا ہے تو ایسی صورت میں بیروزگاروں کی تعداد میں مزید اضافہ ریکارڈ کیا جائے گا جو کہ ملک کے مفاد میں نہیں ہے۔ اسی طرح ٹیلی کام شعبہ میں بھی خانگی کمپنیوں کی جانب سے ملازمین کی تعداد میں تخفیف کا منصوبہ تیار کیا گیا ہے اور آئندہ 2تا3ماہ کے دوران 40ہزار سے زائد نوجوانوں کے بے روزگار ہوجانے کا خدشہ ہے کیونکہ بیشتر کمپنیوں نے اپنے ملازمین کو ترک ملازمت کے لئے رائج طریقہ کار کے مطابق ان سے استعفی وصول کرلیا ہے اور یہ باور کروایا جا رہا ہے کہ ملازمین نے رضاکارانہ طور پر مستعفی ہونے کا فیصلہ کرتے ہوئے کمپنیوں کو نوٹس دیدی ہے جبکہ آئی ٹی و ٹیلی کام شعبوں میں خدمات انجام دینے والوں کا کہنا ہے کہ مختلف قانونی رسہ کشی سے بچنے کیلئے کمپنیو ںکی جانب سے یہ طریقہ کار اختیار کیا گیا ہے اور آئندہ چند ماہ کے دوران مزید نوجوانوں کو ملازمت سے بیدخل کیا جائے گا کیونکہ کمپنیو ںکا ماننا ہے کہ معاشی عدم استحکام کی صورتحال کے سبب کمپنیو ںکو خسارہ کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ ماہرین کا کہناہے کہ بیرونی سرمایہ کاری اور نئے ٹیکس قوانین کے علاوہ غیر منصوبہ جاتی سرمایہ کاری کے سبب صورتحال ابتر ہوتی جا رہی ہے اور کمپنیاں اگر مقروض ہوتی گئی تو معاشی صورتحال مزید ابتر ہو سکتی ہے ۔ ہندستان کی ان ریاستو ںمیں جہاں انفارمیشن ٹیکنالوجی کو زبردست فروغ حاصل ہوا ہے اور لاکھوں کی تعداد میں نوجوان آئیٹی شعبہ میں خدمات انجام دے رہے ہیں ان ریاستوں کو آئندہ چند ماہ کے دوران سنگین معاشی بحران کی صورتحال کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے ۔ آئی ٹی شعبہ میں خدمات انجام دے رہے نوجوانوں کے ساتھ ساتھ اب ٹیلی کام شعبہ میں خدمات انجام دینے والے نوجوانوں کو بھی غیر یقینی حالات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے جو کہ ان کے لئے انتہائی تکلیف کا سبب بن رہاہے۔

TOPPOPULARRECENT