Sunday , December 17 2017
Home / شہر کی خبریں / بیروزگاری کے خلاف کودنڈارام کی ریالی کی حمایت و تائید :کانگریس

بیروزگاری کے خلاف کودنڈارام کی ریالی کی حمایت و تائید :کانگریس

بیروزگاروں کی حمایت میں چیرمین تلنگانہ جے اے سی کی حکومت سے علم بغاوت : جی چناریڈی
حیدرآباد ۔ 18 فبروری (سیاست نیوز) سکریٹری اے آئی سی سی و رکن اسمبلی جی چناریڈی نے بیروزگاری کے خلاف 22 فبروری کو پروفیسر کودنڈارام کی جانب سے منظم کی جانے والی ریالی کو کانگریس کی مکمل تائید و حمایت ہونے کا اعلان کیا ہے۔ پروفیسر کودنڈارام بیروزگاری کے مسئلہ پر حکومت کے خلاف علم بغاوت کا اعلان کرچکے ہیں اور 22 فبروری کو حیدرآباد میں سندریا وگینانا کیندر تا دھرنا چوک اندرا پارک تک ریالی منظم کرنے کا اعلان کرچکے ہیں اور ریالی کو کامیاب بنانے کیلئے تلنگانہ جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے کنوینر پروفیسر کودنڈارام تلنگانہ کے تمام اضلاع کا دورہ کرتے ہوئے طلبہ، نوجوانوں، تلنگانہ جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے نمائندوں، رضاکارانہ تنظیموں کے ذمہ داروں سے ملاقات کرتے ہوئے ریالی کو کامیاب بنانے کی اپیل کررہے ہیں۔ کانگریس کے رکن اسمبلی سابق وزیر  جی چناریڈی نے پروفیسر کودنڈارام کی جانب سے 22 فبروری کو منظم کی جانے والی ریالی کو کانگریس  کی جانب سے مکمل تائید و حمایت رہنے کا اعلان کیا ہے۔ جی چناریڈی نے میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر نے اضلاع کی تنظیم جدید کردی ہے مگر 31 اضلاع میں ملازمین کی کئی جائیدادیں مخلوعہ ہیں۔ ان پر تقررات نہ ہونے کی وجہ سے نظم و نسق ٹھپ ہوکر رہ گیا ہے۔ عوامی مسائل حل ہونے کے بجائے مزید پیچیدہ ہورہے ہیں۔ عہدیدار اضلاع کے حدود تبدیل ہوجانے کا بہانہ کرتے ہوئے عوام کو ایک ضلع کے ہیڈکوارٹر سے دوسرے اضلاع کو روانہ ہونے کا مشورہ دیتے ہوئے اپنی ذمہ داریوں سے بچنے کی کوشش کررہے ہیں۔ علحدہ تلنگانہ ریاست کی تشکیل کے بعد ہرگھر کو ایک ملازمت فراہم کرنے کا کے سی آر نے وعدہ کیا تھا مگر اقتدار کے 32 ماہ کی تکمیل کے باوجود اپنے وعدہ کو عملی جامہ پہنانے میں ناکام ہوگئے ہیں۔ اپنی غلطی کا اعتراف کرتے ہوئے معذرت خواہی کرنے کے بجائے پروفیسر کودنڈارام کو کانگریس کا ایجنٹ قرار دیتے ہوئے اپنی ناکامیوں پر پردہ ڈالنے کی کوشش کررہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT